'It's Time We Define Limits Of Sedition' : Supreme Court Stays Coercive Actions Against Telugu Channels On Sedition FIR

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے رکن پارلیمنٹ آر کرشنم راجو کی مبینہ طور پر قابل اعتراض تقریریں نشر کرنے کے لئے ملک سے بغاوت کے الزامات میں ماخوذ دو تلگو نیوز چینلز کی درخواستوں پر آندھرا پردیش حکومت سے چار ہفتوں میں جواب طلب کیا ہے پیر کو اس کیس کی سماعت کرتے ہوئے ، ایس سی نے کہا کہ آندھرا
حکومت کو ان دونوں چینلز ٹی وی 5 اور اے بی این آندھراجیوت کے خلاف کوئی قدم نہیں اٹھانا نہیں چاہئے۔ عدالت نے کہا کہ چینلز کے خلاف آندھرا حکومت کی جانب سے ملک سے غداری کی کارروائی کرنا ٹھیک
نہیں ہے۔ اب وقت آگیا ہے کہ عدالت غداری کی تعریف کرے۔

اہم بات یہ ہے کہ تلگو چینلز ٹی وی 5 اور اے بی این آندھرا جیوتی نے اپنے خلاف درج ایف آئی آر کو کالعدم قرار دینے اور سپریم کورٹ کے 30اپریل کے اس حکم کی جس میں کوویڈ معاملات کے حوالے سے ایس او ایس کال پر پولس کی زیادتی کو توہین تصور کرنے کہا گیا ہے، آندھرا پولس کے ذریعہ کی گئی خلاف ورزی کوتوہین عدالت قرار دینے کے لیے درخواستیں داخل کی تھیں ۔ ان چینلز پر وائی ایس آر کانگریس کے باغی رکن پارلیمنٹ آر کرشنم راجو کے خیالات کو نشر کرنے پر بغاوت اور سازش کا ایک مقدمہ درج کیا گیا ہے۔