Man who slaps Macron sentenced to 4 months in prison and dismissed from job too

پیرس:(اے یو ایس)فرانس کی ایک عدالت نے صدر امانویل میکروں کو تھپڑ مارنے میں ملوث شخص کو چار ماہ قید اور 14 ماہ کی معطل قید کی سزا سنائی ہے۔عدالت نے ملزم کو فرانس میں سرکاری ملازمت سے بھی بر طرف کرتے ہوئے اسے کسی بھی قسم کے سرکاری عہدے کے لیے تا حیات نا اہل قرار دیا ہے اور پانچ سال تک کسی قسم کا اسلحہ رکھنے پربھی پابندی عائد کی گئی ہے۔

استغاثہ نے 28 ڈامین تاریل کو 18 ماہ قید کی سزا کا مطالبہ کیا تھا۔اٹارنی جنرل نے صدر پر تاریل کے حملے کو “سراسر ناقابل قبول” قرار دیتے ہوئے اس فعل کو “جان بوجھ کر تشدد کا فعل” قرار دیا ہے۔العربیہ اور الحدث چینلوں کے مطابق نوجوان مقدمے کی سماعت کے دوران پرسکون بیٹھا تھا۔ سزا سننے کے بعد اس نے کوئی تبصرہ نہیں کیا اور نہ ہی کسی قسم کی پریشانی کا اظہار کیا ۔

عدالت نے اسے فوری طور پر جیل بھیجنے کا حکم جاری کیا۔فرانس میں اس قسم کی سزا کو سخت سزا کہا جاتا ہے کیونکہ فرانس میں قاعدہ ہے کہ سزا سنائے جانے کے بعد بھی سزا کے خلاف اپیل کے لیے مجرم کو آزاد چھوڑ دیا جاتا ہے۔