Pakistan to hold Legislative Assembly polls in PoK on July 25

اسلام آباد:(اے یو ایس) پاکستان مقبوضہ کشمیر کے اعلی انتخابی عہدیدار نے کورونا وائرس کے خدشے کے باعث انتخابات دو ماہ کے لئے ملتوی کرنے کی اپیلوں کے باوجود 25 جولائی 2021 کو مقننہ اسمبلی کے لئے عام انتخابات کا انعقاد کرنے کا اعلان کیا۔ پچھلے سال پاکستان نے گلگت بلتستان میں قانون ساز اسمبلی کے انتخابات کروائے تھے۔

ہندوستان نے گلگت بلتستان میں انتخابات کے انعقاد کے فیصلے پر پاکستان کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا اور کہا تھا کہ فوج کے زیر قبضہ علاقے کی حیثیت کو تبدیل کرنے کے لئے کی جانے والی کسی بھی کارروائی کی کوئی قانونی بنیاد نہیں ہے۔ ہندوستان نے پاکستان کو بھی واضح طور پر آگاہ کیا ہے کہ جموں و کشمیر اور لداخ کے پورے وسطی علاقوں بشمول گلگت بلتستان کے علاقے اس کے اپنے ملک کے لازمی حصہ ہیں۔چیف الیکشن کمشنر جسٹس (ر) عبدالرشید سلیریانے پاکستان کے مقبوضہ کشمیر (پی او کے) کے دارالحکومت مظفرآباد میں پریس کانفرنس میں انتخابات کے شیڈول سے آگاہ کیا ہے۔

پی او کے الیکشن کمیشن کے سربراہ سلیریا نے کہا کہ ”25 جولائی کو کشمیر کے لوگ اچھے گورننس کے لئے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ امیدوار 21 جون تک کاغذات نامزدگی جمع کراسکتے ہیں اورحتمی فہرست 3 جولائی 2021 کو جاری کی جائے گی“۔رپورٹس کے مطابق انتخابات قانون ساز اسمبلی کے 45 نمائندوں کے انتخاب کے لئے ہوں گے ، جن میں پی او کے میں 33 اور کشمیری تارکین وطن کے 12 شامل ہیں۔ سلیریا نے کہا اس انتخاب میں چار حلقوں میں اضافہ کیا گیا ہے۔

پولنگ کے دوران نیم فوجی دستے اور پولیس کے ساتھ ساتھ پولیس کو بھی تعینات کیا جائے گا تاکہ 28 لاکھ اہل ووٹرز اپنا حق رائے دہی استعمال کرسکیں۔ اس سے قبل نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر نے کورونا وائرس کی بحالی کے خدشے کے پیش نظر پی او کے میں انتخابات دو ماہ کے لئے ملتوی کرنے پر زور دیا تھا لیکن حزب اختلاف کی تمام جماعتوں نے اسے مسترد کردیا تھا۔پی او کے قانون ساز اسمبلی کے لئے آخری عام انتخابات جولائی 2016 میں ہوئے تھے اور سابق وزیر اعظم نواز شریف کی سربراہی میں پاکستان مسلم لیگ نواز نے جیت لیا تھا۔