Kashmir: man eater leopard captured in Budgam

سرینگر:(اے یو ایس) کشمیر میں محکمہ وائلڈ لائف کو تقریباً 2 ہفتے کی مشقت کے بعد گذشتہ دنوں اس وقت ایک زبردست کامیابی ملی جب محکمہ کے عملہ نے اس آدم خور تیندوے کو پکڑ لیا جس نے ایک 4سالہ بچی کو زندہ کھا لیا تھا ۔ ریجنل وایلڈ لائف وارڈن کشمیر راشد نقاش کا کہنا ہے محکمہ نے وسطی کشمیر کے بڈگام ضلع میں اس مادہ تیندوے کو پکڑنے کے لئے جال بچھا رکھے تھے۔ اوم پورہ علاقے 3 جون کو ایک 4 سالہ بچی ادا یاسر کو جب تیندوے نے صحن سے اٹھاکر نزدیکی نرسری میں اپنا شکار بنایا تھا تب سے ہی اس کی تلاش جاری تھی اور اس تلاش کے دوران ضلع میں پانچ تیندوے رہایشی علاقوں کے نزدیک پکڑے گئے لیکن یہ مادہ تیندوا ان کے ہاتھ نہیں آرہی تھی۔

اس تیندوے کو مارنے کے لئے شکاری بھی کام پر لگائے گئے تھے۔راشد نقاش سے جب یہ پوچھا کہ انہوں نے اس تیندوے کی پہچان کیسے کی تو انہوں نے بتایا کہ اس کی پہچان اس کے پنجوں کے نشان سے کی گئی اور یہ اسی علاقے میں سرگرم تھی۔ وایلڈ لایف کے اہلکاروں نے بتایا کہ کچھ دن قبل اس تیندوے کو ڈی سی آفس کے قریب پایا گیا لیکن گ±نجان جھاڑیوں کی وجہ سے یہ انکے ہاتھ سے نکل گئی اور شکاری بھی کچھ نہ کرسکے۔ اس کے بعد اوم پورہ اور اس کے آس پاس علاقے میں مستقل پیٹرول جاری رکھی گئی اور محکمہ وائلڈ لایف کا ایک کنٹرول روم قایم کیا گیا۔

ریجنل وائلڈ لایف وارڈن راشد نقاش نے کہا کہ وہ یقین کے ساتھ کہہ سکتے ہیں کہ یہ وہی آدم خور تیندوا ہے۔پکڑے گئے تیندوے کو داچھی گام منتقل کیا گیا ہے۔وائلڈ لایف ماہرین کا کہنا ہے کہ ایسے تیندوے کافی دیر تک بند رکھنے پڑتے ہیں اور اس کے بعد ہی انکی بازآباکاری کے بارے میں سوچا جاتا ہے۔پچھلے ڈیڑھ ہفتے میں کشمیر میں 9 تیندوے پکڑے گئے ہیں جن میں دو تیندوے کے بچے بھی شامل ہیں۔ یہ سارے تیندوے انسانی بستیوں میں یا پھر انکے آس پاس گھومتے پائے گئے ہیں۔