Afghan people will defend the country if war imposed on them : Abdullah Abdullah

واشنگٹن :افغانستان کی اعلیٰ اختیاراتی کونسل برائے قومی مفاہمت کے چیرمین عبداللہ عبداللہ نے کہا ہے کہ اگر ہم پر جنگ مسلط کی گئی تو افغان عوام ملک کا دفاع کریں گے ۔عبداللہ عبداللہ نے میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ امن ہمیشہ سے افغانستان کے عوام کا مطالبہ رہا ہے۔لیکن اگر ان پر جنگ تھوپی گئی تو ان کے پاس اپنے ملک کے دفاع میں ہتھیار اٹھا لینے کے سوا کوئی دوسرا چارہ نہیں ہوگا۔تاہم امن کی کوششیں جاری ہیں۔

عبداللہ نے مزید کہا کہ ماسکو میں طالبان کے نمائندوں کے ساتھ میری گذشتہ ملاقات میں میرا پیغام یہ تھا کہ طاقت یا جنگ سے طرفین کسی نتیجہ پر نہیں پہنچ سکتے۔اور اگر طالبان جارحیت سے اپنے ہدف تک پہنچنے کی کوشش کریں تو یہ ممکن نہیں ہوگا۔ واشنگٹن میں امریکی صدر جو بائیڈن سے اپنی ملاقات میں عبداللہ نے کہا کہ بائیڈن نے وعدہ کیا ہے کہ امن عمل میں امریکہ افغان عوام کے ساتھ ہوگا اور افغان سلامتی دستوں کی حمایت جاری رکھے گا۔

عبداللہ نے کہا کہ امریکہ افغانستان سے اپنی فوجیں واپس لے جائے گا لیکن افغانستان کی مدد جاری رکھے گا۔واضح ہو کہ جمعہ کو صدر اشرف غنی اور عبداللہ عبداللہ نے وائٹ ہاو¿س میں صدر بائیڈن سے ملاقات کی تھی اور امریکی صدر نے پائیدار شراکت کا وعدہ کیا تھا۔