Security forces kill 5 militants in Kashmir

سری نگر: سلامتی دستوں نے گذشتہ 24گھنٹے کے دوران کشمیر میں علیحدہ انتہاپسندی مخالف کارروائیوں میں5خونخوار دہشت گردوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔ پولس کے مطابق جنوبی کشمیر کے زدورا اننت ناگ میں -1راشٹریہ رائفلز اور جموں و کشمیر پولس کی ایک مشترکہ کارروائی میں سلامتی دستوں نے دو انتہاپسندوں کو ہلاک کر دیا ان دونوں کا تعلق لشکر طیبہ سے تھا۔

سلامتی دستوں نے علاقہ میں انتہاپسندوں کی موجودگی کی خفیہ اطلاع ملنے کے بعد یہ مشترکہ کارروائی کرتے ہوئے علاقہ کی گھیرا بندی کر کے گھر گھر تلاشی کا کام شروع کر دیا کہ اسی دوران خود کو پوری طرح سے گھرا پا کر انتہاپسندوں نے سلامتی دستوں پر فائرنگ شروع کر دی۔سلامتی دستوں نے جوابی کارروائی کی اور دونوں میں باقاعدہ جھڑپ شروع ہو گئی جس میں لشکر طیبہ کے دونوں انتہا پسند مارے گئے۔قبل ازیں سلامتی دستوں اور جموں و کشمیر پولس نے جنوبی کشمیر کے پلوامہ پچھل میں دو انتہاپسندوں کو ہلاک جکر دیا۔ شمالی کشمیر میں حزب المجاہدین کے ایک خطرناک انتہا پسند پولس اور سلامتی دستوں کے مشترکہ ٹیم کے ساتھ تصادم میں مارا گیا۔

پولس کے مطابق یہ انتہاپسند کئی سالوں سے سرگرم تھا اور حزب المجاہدین سے طویل عرصہ سے وابستہ تھا۔کشمیر رینج کے انسپکٹر جنرل وجے کمار نے اسے زبردست کامیابی قرار دیتے ہوئے پولس اور سلامتی دستوں کو مبارکباد دی اور وادی میں انتہاپسندی مخالف کارروائیاں جاری رکھنے کے اپنے عزم کا اعادہ کیا۔ انہوں نے اپنے ایک ٹوئیٹر پیغام میں سلامتی دستوں اور پولس کو مبارکباد دیتے ہوئے عوام کے تحفظ کو یقینی بنانے اور عام لوگوں کاکسی قسم کا نقصان کیے بغیرانتہاپسندوں کے خلاف کارروائی پر بھی ان کی خوب ستائش کی۔انہوں نے کہا کہ اس کامیابی نے ایک بار پھر سلامتی دستوں کی صورت حال سے نمٹنے اور آسانی سے کارروائی کرنے کی صلاحیت و قابلیت ثابت کردی۔