Hamilton police arrest man following anti-Muslim hate crime

اوٹاوا:(اے یو ایس) کناڈا میں اسلامو فوبیا کے واقعات میں کوئی کمی واقع نہیں ہو رہی اور ایک تازہ واردات میں ہملٹن شہر میں ایک انتہا پسند نے مسلمان ماں بیٹی کو کچلنے نے کوشش کی تاہم دونوں بال بال بچ گئیں۔ اس حملہ آور نے پارکنگ میں مسلمان ماں بیٹی پر گاڑی چڑھانے کی کوشش کی لیکن دونوں نے بھاگ کر قریب جھاڑیوں کے پیچھے دبک کر جان بچائی مسلح حملہ آور نے ان دونوں خواتین کا تعاقب کیا،انہیں قتل کی دھمکیاں دیں اورنفرت آمیز جملے کہے۔کناڈیائی پولیس نے حملہ آور کو گرفتار کرکے تحقیقات شروع کردی۔

یہ دونوں خواتین ہملٹن کے اندرونی شہر کی ایک مسجد کے امام کمال گرگی کی 62سالہ اہلیہ اور26سالہ بیٹی تھیں اور رات ساڑھے نو بجے ایک پارکنگ میں چہل قدمی کر رہی تھیں۔دوسری جانب کناڈا میں اسلاموفوبیا کے بڑھتے واقعات پر بائیس جولائی کو حکومت نے ہنگامی اجلاس طلب کر رکھا ہے۔

یاد رہے گذشتہ ماہ پاکستانی نڑاد محمد کاشف کناڈا کے شہرساسکاٹون میں حملے کانشانہ بنے تھے ، محمد کاشف کو 2سفید فام نسل پرستوں نے چاقو مار کر زخمی کیا، اور ان کی داڑھی مونڈھ دی تھی۔اس سے قبل سینٹ البرٹ میں نامعلوم افراد کی جانب سے دو مسلمان خواتین کو راہ چلتے دھکے دے کر ان کے سروں سے حجاب کھینچا گیا، اچانک حملے کے باعث وہ خواتین زمین پر گر پڑیں تھیں۔

واضح رہے 6 جون کو کناڈاکے شہر لندن انٹاریو میں دہشت گردی کے واقعے میں ایک خاندان کے چار افراد 46 سالہ فزیوتھراپسٹ سلمان افضل، ان کی اہلیہ اور پی ایچ ڈی کی طالبہ 44 سالہ مدیحہ سلمان، نویں جماعت کی طالبہ 15 سالہ یمنیٰ سلمان اور ا±ن کی 74 سالہ ضعیف دادی کو ٹرک کے نیچے روند ڈالا گیا تھا۔ کناڈا کے وزیراعظم جسٹن ٹروڈو نے اس حملے کی مذمت کرتے ہوئے اسے دہشت گردی قرار دیا تھا۔ 20 سالہ ملزم یتھینیل ویلٹمین پر قتل کے چار اور اقدامِ قتل کا ایک الزام عائد کیا گیا تھا۔