China flood death toll rises to 33

بیجنگ: وسطی چین میں بھیانک سیلاب سے کم از کم33افراد ہلاک اور 8لاپتہ اور سڑکیں اور آمد و رفت کے لیے استعمال ہونے والے بیشتر میٹرو ٹرین ا سٹیشن پانی میں ڈوب گئے۔ غیر معمولی بارش اور پھر سیلاب آجانے کے بعد سب وے کاروں میں متعدد لاگ پھنس گئے۔طوفانی بارشوں اور پھر سیلاب سے تودے گرنے اور دریاو¿ں میں طغیانی آجانے سے وسطی علاقوں کے لوگوں کے لیے صورت حال نہایت ناگفتہ بہ ہو گئی ہے۔صوبہ ہنان میں 10 ہزار سے زائد افراد کو محفوظ پناہ گاہوں میں منتقل کیا گیا ہے۔

حکام نے تصدیق کی ہے کہ سیلاب کے باعث صوبے میں کم از کم 12 افراد کی ہلاکت ہوئی ہے۔بارش اور سیلاب کی وجہ سے ایک درجن سے زائد شہر متاثر ہوئے ہیں، متعدد سڑکوں پر ٹریفک بند اور ہوائی اڈوں سے پروازوں کو منسوخ کر دیا گیاہے۔صوبہ ہنان میں، جس کی آبادی نو کروڑ سے زائد ہے، غیر معمولی بارشوں کے بعد کے حکام نے آئندہ چند دنوں میں شدید ترین موسم کا انتباہ جاری کیا ہے۔ائیک اور شہر شین شیانگ میں دریا خطرے کے نشان سے اوپر بہہ رہے ہیں اور سات جھیلوں میںطغیانی آئی ہوئی ہے۔جس سے58دیہات اور4 لاکھ70ہزار افراد متاثر ہوئے۔