Taliban Attacks Pushed Back in Kapisa District: Official

محمود راقی: ایک پولس عہدیدار کے مطابق کاپیسا صوبے کے نجراب ضلع میں افغان سلامتی دستوں اور عوامی رضاکارانہ دستوں نے متحد ہو کر طالبان کے حملوں کو ناکام کر دیا ۔کاپیسا پولس کے ترجمان شائق شورش نے کہا کہ یہ حملے نجراب ڈسٹرکٹ میں درہ کلاں اور درہ فاروق شاہ میں کیے گئے ۔انہوں نے مزید کہا کہ یہ جھڑپیں منگل اور بدھ کی درمیانی شب میں 4بجے شروع ہوئی تھیں۔

شورش نے کہا کہ ان جھڑپوں میں چھ افراد ہلاک ہوئے جن میں دو عام شہری اور چار عوامی رضاکارانہ دستوں کے جانباز تھے۔یہ جھڑپیں اس وقت ہوئی جب کاپیسا کے ایک سابق گورنر محراب الدین صفی نے دو شنبہ کو یہ کہا کہ عوامی رضاکارانہ دستوں کے درمیان کمزور رابطہ کی وجہ سے کئی اہم علاقے بشمول نجراب ضلع طالبان کے قبضہ میں چلے گئے۔

صفی نے یہ بھی کہا کہ کثیر تعداد میں طالبان جنگجوو¿ں کی موجودگی بھی کاپیسا کے اضلاع پر طالبان کے قبضہ کا باعث بنے۔ نجراب ضلع کو طالبان کے قبضہ سے بازیاب کرانے کے لیے گذشتہ دو ہفتوں سے نجراب کے کئی علاقوں میں جھڑپیں ہو رہی ہیں۔ان جھڑپوں کے باعث ہزاروں مقامی باشندے نقل مکانی کر گئے۔