If Taliban come to power in Afghanistan, we will not recognize them:says EU envoy

کابل: یورپی یونین ( ای یو )نے افغانستان میں طالبان رہنماؤں کے چین کے ساتھ بڑھتے ہوئے تعلقات کے درمیان اپنا سخت موقف واضح کیا ہے۔ یورپی یونین نے کہا ہے کہ اگر طالبان افغانستان میں اقتدار حاصل کرنے میں کامیاب ہو بھی جاتا ہے تب بھی اسے کسی بھی صورت میں تسلیم نہیں کیا جائے گا۔

افغانستان میں یورپی یونین کے وفد کے سربراہ تھامس نکلسن نے طالبان کی پیشقدمی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے یہ بات کہی۔ انہوں نے کہا کہ ہم ہر ممکن افغانستان کی ترقی میں تعاون دیتے ہوئے سیاسی طور پر موجودہ حالات کا حل تلاش کرنے میں بھی شامل ہوں گے ، لیکن اگر طالبان 1990 کی طرح امارت اسلامیہ کا منصوبہ دیتے ہیں تو اس کو منظور نہیں کیا جائے گا۔ حالانکہ ، انہوں نے کہا کہ یورپی یونین کو افغانستان سے مذاکرات کے لیے طالبان کی طرف سے کوئی تجویز موصول نہیں ہوئی۔

دوسری جانب ، افغانستان کی وزارت دفاع کے مطابق ، افغان فورسز نے غزنی ، قندھار ، ہرات ، فرح ، جوزان ، بلخ ، سمگن ، ہلمند ، تخار ، قندوز ، بگلان ، کابل اور کاپیسا میں آپریشن کرکے ہفتے کے روز سے اب تک 300 کے قریب دہشت گردوں کو ہلاک کیا ہے۔ جبکہ طالبان نے 10 سرحد پار صوبوں پر بھی قبضہ کر لیا ہے۔ واضح ہو کہ افغان فوج نے گزشتہ 48 گھنٹے میں تقریباً300 دہشت گردوں کو ہلاک کر دیا ہے۔