At least 42 dead, including 25 soldiers, as wildfire rips through Algeria

الجزائر: (اے یو ایس ) افریقی ملک الجزائر کے صدر عبدالمجید تبون نے اعلان کیا ہے کہ منگل کے روز آگ بجھانے کے لیے شروع کردہ ریسکیو آپریشن کے نتیجے میں42افراد ہلاک ہو گئے جن میں 25 فوجی شامل ہیں۔انہوں نے ٹوئٹر پر اپنے ٹویٹس میں مزید کہا کہ ریسکیو آپریشن میں آگ سے متاثرہ علاقوں سے 100 سے زائد شہری شامل ہیں۔

صدر مملکت نے متاثرہ خاندانوں اور فوت ہونے والے اہلکاروں کے لواحقین سے تعزیت بھی کی۔الجزائر میں فائر فائٹرز نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ مقامات پر 25 آگ لگی ہوئی ہے۔ آتش زدگی کا شکار 10 مقامات مختلف میونسپلٹیوں میں ہوا ہے۔فائر بریگیڈ نے انکشاف کیا کہ متاثرہ میونسپلٹیوں میں ایت تودرت ، اقبیل ، آیت یحییٰ ، ابی یوسف ، زراع المیزان ، ایجر ، ایفیعا اورایفلیسن شامل ہیں۔

اس کے علاوہ شہری دفاع کے ڈائریکٹوریٹ نے اعلان کیا کہ تمام انسانی اور مادی صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے آگ بجھانے کا عمل اب بھی جاری ہےقابل ذکر ہے کہ الجزائر نیوز ایجنسی نے گذشتہ صبح اعلان کیا تھا کہ آگ لگنے سے 17 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ گھروں کے قریب کچھ آگ بھڑک اٹھی جس نے رہائشیوں کو نقل مکانی پر مجبور کیا۔

فائر فائٹنگ ٹیمیں اور ہیلی کاپٹر ابھی بھی آگ پر قابو پانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ یہ آگ دارالحکومت سے 100 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ریاست تزی اوزو میں آبادی کے لیے خطرہ بنی ہوئی ہے۔