US asks Pakistan to eliminate Taliban safe havens along Afghan-Pak border

واشنگٹن:(اے یوایس)امریکی محکمہ دفاع پینٹاگون نے کہا ہے کہ پاک افغان سرحد پر موجود شدت پسندوں کی محفوظ پناہ گاہوں پر پاکستان کے ساتھ بات چیت جاری ہے۔پینٹاگون کا کہنا ہے کہ محفوظ پناہ گاہوں کی موجودگی عدم استحکام و عدم تحفظ کا ذریعہ ہیں، یہ محفوظ پناہ گاہیں طالبان یا دوسرے نیٹ ورک کو استعمال نہ کرنے دی جائیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ ترجمان پینٹاگون جان کربی نے افغانستان میں امریکی فضائی حملوں کی تصدیق کرتے ہوئے کہا تھا کہ افغان فورسز کی مدد کے لیے فضائی حملے جاری رہیں گے۔ امریکہ کا کہنا ہے کہ یہ محفوظ پناہ گاہیں جنگ زدہ ملک میں عدم تحفظ اور عدم استحکام کا باعث بن رہی ہیںَ ۔

پنٹاگون پریس سکریٹری جان کربی نے کہا کہ امریکی وزیر دفاع لائیڈ آسٹن اور پاکستان کے فوجی سربراہ جنرل قمر جاوید باجوا کے درمیان ٹیلی فونی گفتگو کے دوران، جس میں دونوں نے افغانستان کی صورت حال، علاقائی سلامتی و استحکام اور دو طرفہ دفاعی تعلقات پر وسیع النظری سے تبادلہ خیال کیا گیا، امریکہ نے پاکستان کی قیادت کو نہایت سخت پیغام بھی بھیجا کہ وہ پاک افغان سرحد سے طالبان دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں کا فی الفور صفایہ کرے۔