Chinese court sentences Canadian citizen to 11 years in prison

بیجنگ: چین کی ایک عدالت نے ہواوے سے متعلق کیس میں جاسوسی کے الزام میں کناڈیائی شہری مائیکل سپیور کو 11 سال قید کی سزا سنائی ہے۔ کناڈا کی حکومت کی جانب سے چینی ٹیکنالوجی کمپنی کے ایک ایگزیکٹو کو گرفتار کرنے کے بعد 2018 میں سپیور کو حراست میں لیا گیا تھا۔ بدھ کے روز لیا گیا یہ فیصلہ اس بات کی جانب تازہ اشارہ ہے کہ چین کس طرح کناڈا پر دباؤ بڑھا رہا ہے ، جہاں ایک عدالت میں یہ فیصلہ آنا ہے کہ آیا ایگزیکٹو آفیسر مینگ وانزہو کو امریکہ میں مجرمانہ الزامات کا سامنا کر نے کے لئے انہیں سونپا جائے یا نہیں۔

سپیور اور ایک اور کناڈیائی شہری کو چین سے حراست میں لیا گیا جسے ناقدین نے یرغمال بنانے کی سیاست قرار دیا۔ یہ کارروائی ایران پر تجارتی پابندیوں کی ممکنہ خلاف ورزیوں کے سلسلے میں 2018 میں ایک چینی ایگزیکٹو کی گرفتاری کے بعد کی گئی ہے۔ چین کی ایک دیگر عدالت نے منگل کے روز ایک تیسرے کناڈیائی شہری کی اپیل بھی مسترد کر دی جس کی منشیات کے معاملے میں جیل کی سزا کو ایگزیکٹو آفیسر کی گرفتاری کے بعد ’موت ہونے تک عمر قید ‘میں تبدیل کر دیا گیا۔ بیجنگ سے 340 کلو مشرق میں ڈانڈونگ شہر میں سماعت کے دوران کناڈیائی سفیر ڈومینک بارٹن عدالت میں موجود تھے۔