Chinese Authorities Locking up People Inside Houses

بیجنگ:کورونا کے ڈیلٹا ویریئنٹ سے متعلق کیسز کی تعداد میں اضافے کی وجہ سے چین کے حالات خراب ہونے لگے ہیں۔ سوشل میڈیا پر کئی ویڈیوز منظر عام پر آئی ہیں جن میں چینی حکام لوگوں کو گھروں میں بند کر رہے ہیں۔ تائیوان نیوز میں کیونی ایورنگٹن نے لکھا ہے کہ یہ اقدامات ووہان میں وبا کے آغاز میں کیے گئے تھے ، لیکن اب لوگ دوبارہ اپنے گھروں میں بند ہو رہے ہیں کیونکہ ملک میں کورونا کیسز دوبارہ بڑھنے لگے ہیں۔ ویبو ، ٹویٹر اور یوٹیوب پر کئی ویڈیوز منظر عام پر آچکی ہیں ، جن میں چینی حکومت کے اہلکار گھروں کے دروازوں پر لوہے کی سلاخیں رکھ کر انہیں ہتھوڑوں سے مار رہے ہیں ، تاکہ نہ تو کوئی اندر داخل ہو سکے اور نہ ہی کوئی باہر نکل سکے۔

سڑک سبزیوں کا ایک گچھہ بھی تیار کیا گیا ہے تاکہ یہ ان لوگوں کو دیا جاسکے جن کو گھروں میں بند کیا گیا ہے۔ وہیں سوشل میڈیا پر شیئر کی گئی ویڈیو سے متعلق یہ دعویٰ بھی کیا جا رہا ہے کہ اگر کسی نے دن میں تین بار سے زیادہ دروازہ کھولا تو اسے سرکاری اہلکار اندر سے بند کر دیں گے۔وائرل ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ سرکاری اہلکار پی پی ای کٹس پہنے لوگوں کے گھروں کے دروازوں پر لوہے کی سلاخیں نصب کر رہے ہیں۔ اس کے ساتھ یہ اعلان کیا جا رہا ہے کہ لوگ گھروں سے باہر نہ نکلیں۔ ساتھ ہی یہ خبردار کیا جا رہا ہے کہ اگر اپارٹمنٹ میں ایک بھی کورونا مریض پایا جاتا ہے تو پوری عمارت کو دو سے تین ہفتے یا اس سے زیادہ کے لیے سیل کر دیا جائے گا۔