India monitoring situation in Afghanistan, govt in touch with Hindu, Sikh leaders: Jaishankar

نئی دہلی:و زیر خارجہ ایس جے شنکر نے کہا کہ کابل پر بھی طالبان کے کنٹرول کی روشنی میں ہندوستان افغانستان کی صورتحال پر کڑی نظر رکھے ہوئے ہے۔وزیر خارجہ نے اس ضمن می سلسلے وار کئی ٹویٹس کئے اور لکھا کہ حکومت ہند کابل میں رہنے والے اپنے شہریوں اور سکھ اور ہندو برادری کے رہنماو¿ں سے براہ راست رابطے میں ہے۔ انہوں نے ٹویٹ کیا کہ ہندوستان واپس لوٹنے کے خواہشمند ہندوستانیوں کی تشویش سمجھ رہا ہے اور ہم ہر ایک کو بحفاظت نکالنے کے لیے کام کر رہے ہیں۔ جے شنکر نے کہا کہ اہم چیلنج کابل ہوائی اڈے کا آپریشن ہے۔

اس سلسلے میں شراکت داروں کے ساتھ بات چیت کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم کابل میں سکھ اور ہندو برادری کے رہنماؤں سے مسلسل رابطے میں ہیں۔افغانستان کی بگڑتی ہوئی صورتحال کے درمیان ہندوستانی وزارت خارجہ نے ایک ہیلپ لائن نمبر اور ای میل آئی ڈی جاری کی ہے۔ وزارت خارجہ کے ترجمان ارندم باگچی نے ہیلپ لائن نمبر +919717785379 جاری کیا۔ ہیلپ لائن نمبر اور ای میل آئی ڈی پر ہندوستان کے لوگ ہر خبر لے سکتے ہیں یا افغانستان میں اپنے قریبی لوگوں کے بارے میں جانکاری بھی دے سکتے ہیں۔

وزیر خارجہ ایس جے شنکر اور امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن نے افغانستان کی حالیہ پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا۔ امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے کہا کہ دونوں اعلیٰ سفارت کاروں نے افغانستان کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔ یاد رہے کہ طالبان نے اتوار کو کابل پر بھی قبضہ کر لیا تھا۔ طالبان کے کابل میں آتے ہی افغان صدر اشرف غنی بھاگ گئے ہیں جس کے بعد ملک میں افراتفری پھیل گئی۔ اور لوگ طالبان حکومت سے خوفزدہ ہو کر لوگ افغانستان چھوڑ رہے ہیں۔