EAM Jaishankar discusses Afghanistan developments with German counterpart

نئی دہلی : وزیر خارجہ ایس جے شنکر نے اپنے جرمن ہم منصب ہیکو ماس کے ساتھ افغانستان سے لوگوں کے ہنگامی انخلا سے متعلق چیلنجوں پر تبادلہ خیال کیا۔ جے شنکر نے ٹویٹ کیا ،جرمنی کے وزیر خارجہ ہیکو ماس کے فون کی میں قدر کرتا ہوں ۔

انہوں نے اس ٹیلی فونی گفتگو میں افغانستان سے لوگوں کو بحفاظت نکالنے میں پیش آنے والی دشواریوں ، چیلنجوں اور وہاں کی تبدیلیوں کی پالیسی کی پیچیدگیوں پر تبادلہ خیال کیا۔ ہندوستان کابل میں اتوار کی شام طالبان کے قبضے کے بعد افغانستان میں تیزی سے بدلتی ہوئی صورت حال پر امریکہ ، برطانیہ اور کئی دیگر ممالک سے رابطہ رکھے ہوئے ہے۔ طالبان کے قبضے کے بعد کابل ہوائی اڈے کے آس پاس افر تفری کے مد نظر وہاں سے لوگوں کو نکالنے میں ہندوستان سمیت کئی ممالک کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

ہندوستان نے ہفتے کے روز ہندوستانی فضائیہ کے ایک ٹرانسپورٹ فوجی طیارے سے کابل سے تقریباً 80 ہندوستانیوں کو نکالا۔ کابل سے ہندوستانیوں کو نکالنے کے بعد طیارہ تاجکستان کے دوشنبے پہنچا۔ ہندوستان نے منگل کو ہندوستانی سفیر اور کابل میں اپنے سفارتخانہ کے دیگر اہلکاروں سمیت 200 افرادکو ایئر فورس کے دوسی17- طیاروں سے نکالا تھا۔قبل ازیں دن میں جرمن چانسلر اینجیلا مرکل نے ایک انتخابی جلسہ میں کہا کہ افغان فوج نے بڑی تیزی سے ہتھیار ڈال دیے۔جبکہ ہمیں یہ توقع تھی کہ افغان فوج سخت مزاحمت کرے گی۔مرکل نے کہا کہ اب ساری توجہ افغانستان سے لوگوں کو بحفاظت نکال لانے پر مرکوز ہے اور کس نے کیا کھویا کیا پایا پر تبادلہ خیال کرنے کی ضرورت بعد میں پڑے گی۔