Taliban extend amnesty to Ashraf Ghani, Amrullah Saleh

کابل: طالبان نے جلاوطن صدر اشرف غنی اور نائب صدر امر اللہ صالح کے لیے معافی کا اعلان کیا ہے۔ شدت پسند تنظیم نے کہا کہ اگر دونوں رہنماچاہتے ہیں تو وہ افغانستان واپس آ سکتے ہیں۔ صدر اشرف غنی ملک چھوڑ کر بھاگ گئے ہیں اور ان کے ساتھ ان کا خاندان اور سابق قومی سلامتی کے مشیر حمد اللہ محب بھی ملک چھوڑ گئے ہیں۔ یہ لوگ اس وقت متحدہ عرب امارات میں ہیں۔

پاکستان کے جیو نیوز چینل کو دئیے گئے ایک انٹرویو میں ، سینئر طالبان رہنما خلیل الرحمان حقانی نے کہا کہ ہم اشرف غنی ، امر اللہ صالح اور حمد اللہ محب کو معاف کرتے ہیں۔ ان تینوںلوگوں اور طالبان کے درمیان دشمنی صرف مذہب پر مبنی تھی۔ ہم اپنی طرف سے سب کو معاف کرتے ہیں۔ اس میں عام آدمی سے لے کر ہمارے خلاف لڑنے والے جر نیلوں شامل ہیں۔ طالبان رہنما نے افغانستان سے بھاگنے والے لوگوں سے درخواست کی کہ وہ ایسا نہ کریں ۔

دشمن اس بات کو فروغ دینے میں مصروف ہے کہ عوام سے بدلہ لیا جائے گا۔ تاجک ، بلوچ ، ہزارہ اور پشتون سب ہمارے بھائی ہیں۔ تمام افغانی ہمارے بھائی ہیں اور اس لیے وہ ملک واپس آ سکتے ہیں۔ ہماری دشمنی کی واحد وجہ سیاسی نظام کو تبدیل کرنے کی خواہش تھی۔ نظام اب بدل چکا ہے۔ طالبان وہ لوگ نہیں تھے جنہوں نے امریکہ کے خلاف جنگ لڑی۔ ہم نے امریکہ کے خلاف اسلحہ اٹھایا کیونکہ اس نے ہمارے مادر وطن پر حملہ کیا تھا۔