Video showing Taliban flying US helicopter with a body dangling from it found to be fake

نئی دہلی : ایک آن لائن جریدے آؤٹ لک انڈیا نے سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی اس ویڈیو کے حوالے سے جس میں طالبان کو امریکی فوج کے انخلا کے بعد امریکیوں کی مدد کرنے والے ایک شخص کو قتل کر کے اس کی لاش امریکی جنگی ہیلی کاپٹر سے لٹکا کر پرواز کرتے دکھایا گیا ہے گمراہ کن بتایا اور کہا ہے کہ اس ویڈیو میں جو دکھایا گیا ہے وہ تو درست ہے لیکن اس میں لٹکے ہوئے شخص کو لاش بتانے میں کوئی صداقت نہیں بلکہ یہ فرضی ہے کیونکہ اس میں جس شخص کو لٹکا ہوا دکھایا گیا ہے وہ کوئی لاش نہیں بلکہ خود ایک طالبان جنگجو ہے۔انڈیا ٹوڈے نے اپنے فیکٹ چیک میں بتایا ہے کہ یہ ویڈیو ایک سال پرانی ہے اور افغانستان کی نہیں بلکہ لیبیا میں جاری تنازعہ کے دوران گذشتہ سال بنائی گئی تھی۔اس سے قبل سوشل میڈیا پر اس ویڈیو نے اس متن کے ساتھ گردش کرنا شروع کر دیا تھا کہ طالبان نے امریکی فوجوں کے افغانستان سے واپس ہوتے ہی اپنی سفاکانہ ذہنیت دکھانا شروع کر دی ہے اور امریکہ کے لیے کام کرنے والوں کو چن چن کر مارا جا رہا ہے۔ ملک کے دوسرے بڑے شہر قندھار میں طالبان کے زیر قبضہ امریکی ہیلی کاپٹر’بلیک ہاک‘ اس کے جنگجو اڑاتے دیکھے گئے۔

انہوں نے ایک آدمی کو قتل کیا اور اسے ہیلی کاپٹر سے لٹکا دیا اور کافی دیر تک اڑان بھرتے رہے ۔ کئی صحافیوں نے طالبان کی بربریت کی یہ ویڈیو ٹویٹر پر شیئر کی ہے۔ یہ شخص امریکہ کے لئے کام کرتا تھا۔ امریکہ کے لیے کام کرنے والے ایسے ہی ایک شخص کی زبان کاٹ دی گئی ہے۔ بہت سے دوسرے معاملات میں ، اسی طرح کے لوگوں کے گھروں کے باہر پوسٹر چسپاں کیے گئے ہیں۔اس واقعے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہے ، جس میں ایک شخص کو ہیلی کاپٹر کے ذریعے رسی سے باندھ کر لٹکایا گیا ہے۔ یہ طیارہ قندھار کے کسی علاقے میں اڑایا جا رہا ہے۔ کہا جا رہا ہے کہ طالبان نے کسی بھی شخص کو ایسی ظالمانہ سزا نہیں سنائی ہے۔ کئی صحافیوں نے ویڈیو ٹویٹر پر شیئر کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ سفاک طالبان نے صوبہ قندھار میں ایک شخص کو قتل کیا اور اس کی لاش کو گشت کے لئے نکالے گئے امریکی فوجی ہیلی کاپٹر میں باندھ کر راستے بھر اڑایا ہے۔

فوٹیج میں مبینہ طور پر ایک شخص کو امریکی فوجی ہیلی کاپٹر سے لٹکا ہوا دکھایا گیا ہے۔امریکی فوج کے جانے کے بعد طالبان اسے قندھار صوبے میں گشت کے لیے استعمال کر رہے ہیں۔ ویڈیو کو عام کیمروں سے شوٹ کیا گیا ہے ، جس کی وجہ سے اس شخص کے بارے میں یہ بتانا بہت مشکل ہے کہ وہ زندہ ہے یا نہیں۔ کئی رپورٹوں میں کہا گیا ہے کہ طالبان نے اس شخص کو رسی سے باندھ کر قتل کر دیا۔ طالبان سے جڑے ہونے کا دعویٰ کرنے والے ایک ٹویٹر اکاو¿نٹ ، طالب ٹائمز کی جانب سے شیئر کی گئی فوٹیج میں لکھا گیا ہے کہ ہماری فضائیہ! اس وقت امارت اسلامیہ کی فضائیہ کے ہیلی کاپٹر قندھار شہر کے اوپر سے اڑ ابھر رہے ہیں اور شہر میں گشت کر رہے ہیں۔ڈیلی میل کے مطابق امریکہ کی جانب سے گزشتہ ماہ کم از کم 7 بلیک ہاک ہیلی کاپٹروں کی سپلائی کی گئی تھی۔ 20 سالوں میں امریکہ نے وہاں طرح طرح کے ہتھیار جمع کرائے تھے تاہم فوجیوں نے دفاعی سامان افغانستان میں چھوڑ کر ہی واپسی کر لی۔ 31 اگست کو ہی امریکی افواج نے افغانستان چھوڑ دیا تھا۔ افغانستان سے نکلنے کے بعد امریکی فوج نے کہا کہ 73 طیارے ، 27 ہمویز ، ہتھیاروں کے نظام اور اعلیٰ صلاحیت کے دفاعی سازوسامان کو جانے سے پہلے غیر فعال کر دیا گیا تھا۔