Shardul Thakur all round performance gives relentless India 2-1 series lead

لندن: روہت شرما کی بیرون ملک پہلی سنچری،سریز میں بری طرح ناکام رہنے والے چتیشور پجارا کی سریز میں پہلی ہاف سنچری اور شردل ٹھاکر کا عمدہ آل راؤنڈ مظاہرہ ٹیم انڈیا کی انگلینڈ کے خلاف پانچ ٹسٹ میچوں کی سریز کے چوتھے میچ میں 157رنز سے شاندار کامیابی کے اہم واقعات رہے۔انگلینڈ کی ٹیم368رنز کے ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے 210رنز پر ہی ڈھیر ہو گئی۔ اگرچہ رائے برنس اور حسیب حمید نے پہلی وکٹ لے لیے100رنز بنا کر مڈل آرڈر کو ایک مضبوط بنیاد فراہم کی تھی اور ٹیم انڈیا کے لیے لمحہ فکریہ پیدا کرد یا تھا ۔لیکن دوسری اننگز میں ہاف سنچری بنانے والے شردل ٹھاکر نے برنز کو آؤٹ کر کے کچھ اس طرح بازی پلٹی کہ ہندوستانی بولروں کا جادو سر چڑھ کر بولنے لگا اور انگلینڈ کے کھلاڑیوں نے’ تو چل میں آیا‘ کی گردان شروع کر دی اور انگلینڈ کی ٹیم ہدف سے میلوں دور دم توڑ گئی۔ انگلینڈ کی جانب سے حسیب حمید63رنز بنا کر نمایاں رہے۔

انہوں نے 193گیندوں کا سامنا کیا اور6چوکے لگائے۔برنز نے 125بالوں پر 5چوکوں کے ساتھ50اور کپتان روٹ نے 78گیندوں پر 3چوکوں کی مدد سے36رنز بنائے۔امیش یادو نے تین وکٹ لیے جبکہ بومرا، شردل اور رویندر جڈیجہ نے دو وکٹ لیے۔ملان رن آؤٹ ہوئے۔اس جیت سے ٹیم انڈیا نے نہ صرف 2-1کی سبقت حاصل کر لی ہے بلکہ سریز نہ ہارنا بھی یقینی ہی نہیں ناممکن بنا لیا۔ اگرچہ پہلی اننگز میں191رنز پر ڈھیر ہوجانے کے بعد انگلینڈ کو پہلی اننگز میں99رنز کی سبقت لینے کا موقع دے کر اپنے پرستاروں کو ذہنی طور پر شکست تسلیم کرنے کے لیے کافی حد تک تیار کر دیا تھا ۔ لیکن کسے معلوم تھا کہ روہت شرما، پجارا اور سب سے بڑھ کر شردل ٹھاکر کی شکل میں قسمت کی دیوی پوری طرح ٹیم انڈیا اور اس کے کہتان وراٹ کوہلی پر مہربان بن کر سایہ فگن ہے۔افتتاحی بلے باز روہت شرما ساتھ بلے باز کے ایل راہل کے ساتھ پہلی وکٹ کی رفاقت میں83رنز بنا کر دوسرے وکٹ کے لیے پجارا کے ساتھ 153رنز کی پارٹنر شپ کر کے ٹیم انڈیا کی دوسری اننگز کو سنوارنے کی بھرپور کوشش کی اور اس میں کافی حد تک کامیاب ہوتے نظر آئے لیکن 127رنز کی عمدہ اننگز کھیل کر وہ رابنسن کا شکار ہو گئے۔

انہوں نے 256گیندوں کا سامنا کیا اور14چوکے اور ایک چھکا لگایا۔ لیکن ابھی ٹیم انڈیا اس جھٹکے سے سنبھلی بھی نہیں تھی کہ چتیشور پجارا بھی حوصلہ ہار گئے ۔ پجارا نے 127گیندوں پر 9چوکوں کی مدد سے61رنز بنائے۔اجینکیا رہانے سے پہلے بیٹنگ کے لیے بھیجے جانے والے رویندر جڈیجہ نے کپتان کوہلی کے ساتھ مل کرچوتھی وکٹ لے لیے 59رنز بنا کر سبقت 205تک ہی پہنچائی تھی کہ وہ بھی پویلین لوٹ گئے ۔اگلے ہی اوور میں اجنکیا رہانے بھی پویلین کی جانب چل پڑے۔ اور ایسا محسوس ہونے لگا کہ ٹیم انڈیا 250کا بھی ٹارگٹ نہیں دے سکے گی۔کیونکہ312کے اسکور پر پوری طرح سیٹ بلے باز کپتان وراٹ کوہلی 96گیندوںپر 7چوکوں کے ساتھ44رنز بنا کر معین علی کا شکار ہو گئے اور ٹیم انڈیا کے خیمے میں سناٹا چھا گیا ۔کیونکہ اس بے جان پچ پر ٹیم انڈیا کی سبقت بھی بے جان سی نظر آرہی تھی کہ شردل ٹھاکر نے اس میں بیرون ملک دوسری ہاف سنچری بنا نے کے ساتھ ساتھ شبھ پنت کے ساتھ ساتویں وکٹ کے لیے سنچری پارٹنرشپ کر کے اس میں جان پھونک دی اور ٹیم انڈیا جو حواس باختہ نظر آرہی تھی اپنے دیے ہدف کے دفاع کے لیے کچھ ایسے جوش کے ساتھ میدان میں اتری کہ پھر فتح کا پرچم لہرا کر ہی میدان سے باہر آئی۔شردل نے 72گیندوں پر 7چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے60رنز بنائے۔ جبکہ رشبھ پنت106بالوں پر4چوکوں کی مدد سے50رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

شردل کے شاندار آل راو¿نڈ کھیل کے ساتھ ساتھ ہدف کو مضبوط اور سریز نہ ہارنے کو ناممکن بنانے والی اننگز کھیلنے کے باوجود مین آف دی میچ سے اسی طرح محروم رہ گئے جیسا آسٹریلیا کے حالیہ دورے کے دوران چوتھے اور آخری ٹیسٹ میچ میں رہ گئے تھے۔ اس میچ میںشردل ٹھاکر نے 62رنز کی اننگز کھیلنے کے علاوہ رشبھ پنت کے ساتھ ساتویں وکٹ کی رفاقت میں103رنز بنا کر پہلی اننگز میں خسارے کا فرق کم کیا اور آسٹریلیا کی دوسری اننگز میں چار وکٹ لے کر نہ صرف ٹارگٹ کو ٹیم کی رسائی سے باہر نہیں ہونے دیا بلکہ ٹسٹ میچ جتوا کر سریز 2-1سے جیتنے میں بھی نمایاں کردار ادا کیاتھا۔ پھر بھی مین آف دی میچ رشبھ پنت کو قرار دیا گیا تھا۔