Taliban Announces Head of State, Acting Ministers

کابل: دو ہفتہ تک بے حکومت رہنے کے بعد آخر کار طالبان نے منگل کی شام میں ایک نگراں کابینہ تشکیل دے دی۔ طالبان کی جانب سے کیے گئے اعلان کے مطابق کابینہ 33 افراد پر مشتمل ہے۔ نگران کابینہ میں ملا محمد حسن آخوند کو وزیراعظم اور ملا عبدالغنی برادر اور مولوی عبدالسلام حنفی کو ان کا نائب اور سراج الدین حقانی کو وزیر داخلہ مقرر کیا گیا ہے۔

دریں اثنا ، طالبان کے مذہبی رہنما ملا ہیبت اللہ اخوندزادہ نے نئی کابینہ کے اعلان کے چند گھنٹے بعد ایک نیوز لیٹر کو بتایا کہ نگران کابینہ جلد ہی کام کاج سنبھال لے گی۔بیان میں کہا گیا ہے کہ طالبان انسانی حقوق اور اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کے لیے پرعزم ہیں۔

نگران کابینہ جن رہنماؤں پر مشتمل ہے وہ یہ ہیں۔
ملا محمد حسن آخوند ، قائم مقام وزیر اعظم (قائم مقام وزیر اعظم)،ملا عبدالغنی برادر ، نائب وزیر اعظم،مولوی عبدالسلام حنفی ، نائب وزیر اعظم ،رومی محمد یعقوب مجاہد ، قائم مقام وزیر دفاع،ملا سراج الدین حقانی ، قائم مقام وزیر داخلہ رومی امیر خان متقی ، قائم مقام وزیر خارجہ،ملا ہدایت اللہ بدری ، قائم مقام وزیر خزانہ،شیخ مولوی نور اللہ منیر ، قائم مقام وزیر تعلیم،ملا خیر اللہ خیرخا ، قائم مقام وزیر اطلاعات و ثقافت،قاری دین حنیف ، قائم مقام وزیر اقتصادیات،شیخ مولوی نور محمد ثاقب ، قائم مقام وزیر حج و اوقاف،مولوی عبدالحکیم شرعی ، قائم مقام وزیر انصاف،سرحدوں اور قبائلی امور کے قائم مقام وزیر ملا نور اللہ نوری،ملا محمد یونس اخندزادہ ، دیہی ترقی کے قائم مقام وزیر،شیخ محمد خالد ، دعوت و رہنمائی کے قائم مقام وزیر ، ملا عبدالمنان عمری ، قائم مقام وزیر برائے تعمیرات عامہ،حاجی ملا محمد عیسیٰ آخوند ، کانوں اور پٹرولیم کے قائم مقام وزیر۔
ملا عبداللطیف منصور ، قائم مقام وزیر پانی و بجلی،ملا حامد اللہ اخوندزادہ ، ہوا بازی اور ٹرانسپورٹ کے قائم مقام وزیر،مولوی عبدالباقی حقانی ، قائم مقام وزیر برائے اعلیٰ تعلیم،مولوی نجیب اللہ حقانی ، قائم مقام وزیر مواصلات،حاجی خلیل الرحمن حقانی ، قائم مقام وزیر مہاجرین،ملا عبدالحق وثق ، قائم مقام ڈائریکٹر جنرل انٹیلی جنس،حاجی محمد ادریس ، افغانستان بینک کے سربراہ،مولوی احمدجان احمدی ، امور کے سربراہ،ملا محمد فاضل مظلوم ، نائب وزیر دفاع، قاری فصیح الدین،شیر محمد عباس ا ستانکزئی ، نائب وزیر خارجہ،رومی نور جلال ، نائب وزیر داخلہ،رومی ذبیح اللہ مجاہد ، نائب وزیر اطلاعات و ثقافت،ملا تاج میر جواد ، انٹیلی جنس کے پہلے ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل،ملا رحمت اللہ نجیب ، انتظامی ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل انٹیلی جنس،انسداد منشیات کے شعبے میں نائب وزیر داخلہ ملا عبدالحق آخوند۔