India set to take part in SCO anti-terror exercise in Pakistan

نئی دہلی: ہند ۔پاک تعلقات میں جاری تلخیوں سے پوری دنیا واقف ہے۔ لیکن اس کے باوجود ہندوستان نے پاکستان کے حوالے سے کئی بار ایسے فیصلے کیے جنہیں ملکی سلامتی کے لیے اہم سمجھا جاتا تھا۔ اس سلسلے میں پاکستان میں 3 اکتوبر سے منعقد ہونے والی شنگھائی تعاون تنظیم کے انسداد دہشت گردی مشق میں بھی ہندوستان شرکت کرے گا۔ اس مشق میں حصہ لینے کے لیے ہندوستان سے تین رکنی ٹیم پاکستان جائے گی۔ پاکستان کے ضلع نوشہرہ کے پبی میں 3 اکتوبر سے ایس سی او انسداد دہشت گردی کی یہ مشق علاقائی(آر اے ٹی ایس) کی قیادت میں یہ انسداد دہشت گردی کے خلاف منعقد کی جا رہی ہے۔

اس مشق کا مقصد ایس سی او کے رکن ممالک کے درمیان دہشت گردی کے خلاف باہمی تعاون کو بڑھانا ہے۔ایس سی او کی یہ مشترکہ مشق ایک ایسے وقت میں ہو رہی ہے جب ہندوستان اور پاکستان کے تعلقات خراب سے بدتر ہوتے جا رہے ہیں۔ اس سال دونوں فریقوں نے جنگ بندی کے معاہدے پر دستخط کیے ، لیکن اس کے باوجود پاکستان کی جانب سے فائرنگ کا سلسلہ رکا نہیں۔ ہندوستانی فوج نے رواں ہفتے کنٹرول لائن کے قریب سے ایک پاکستانی دہشت گرد کو پکڑا ہے۔ ہندوستانی حکومت کا خیال ہے کہ اس مشق میں اس کی شرکت پاکستان کے خلاف سرحد پار دہشت گردی کو فروغ دینے کے اس کے دعوے کو کمزور نہیں کرے گی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ہندوستان نے پاکستان کے ساتھ تلخ تعلقات کے باوجود اس مشترکہ مشق میں حصہ لینے کا فیصلہ کیا ہے۔

درحقیقت حکومت ہند کا خیال ہے کہ اس مشق میں شنگھائی تعاون تنظیم (ایس سی او) کی شرکت سرحد پار دہشت گردی کے معاملے پر پاکستان کے موقف سے کوئی فرق نہیں پڑتا۔ بلکہ اس مشق میں ہندوستان کی موجودگی وسطی ایشیا بالخصوص افغانستان میں سیکورٹی سے متعلقہ مسائل پر نئی دہلی کی اہمیت کی عکاسی کرے گی۔روس ،ہندوستان،چین ، پاکستا ن کے علاوہ ایران بھی اس گروپ مشق میں حصہ لیں گے۔ خیال کیا جاتا ہے کہ یہ گروپ افغانستان کی صورت حال کے حوالے سے حل تلاش کرنے میں اہم کردار ادا کر سکتا ہے۔

مشترکہ مشق کا اعلان رواں سال مارچ میں تاشقند میں کونسل آف آر اے ٹی ایس کے اجلاس کے بعد کیا گیا ، جس میں ہندوستان اپنی شرکت کی تصدیق کرنے والا آخری ملک ہے۔ ایس سی او پروٹوکول کے تحت پاکستان نے ہندوستان سمیت تمام رکن ممالک کو مشترکہ مشقوں کے لیے مدعو کیا تھا۔ تاہم کسی بھی ملک کے فوجی اس مشق میں حصہ نہیں لیں گے۔ اس مشق میں ، ہندوستان ممکنہ طور پر قومی سلامتی کونسل سیکرٹریٹ کے عہدیداروں کو بھیجے گا۔