Cyclone Shaheen: Death toll reaches 13 as storm moves further inland into Oman

مسقط: عمان اور ایران میں سمندری طوفان ‘شاہین’ کی وجہ سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر13 ہوگئی ، جبکہ کئی ایرانی ماہی گیر ابھی تک لاپتہ ہیں۔وہیں طوفان عمان میں آگے بڑھنے سے قدرے کمزورپڑ گیا ہے۔ عمان کے عہدیداروں نے بتایا کہ طوفان اتوار کو یہاں پہنچا تھا۔ انہیں ایک لاپتہ شخص کی لاش برآمد ہوئی ہے ، اس کی گاڑی سیلاب میں بہہ گئی تھی ، اسی طرح ایک بچہ بھی ڈوبنے سے مر گیا جبکہ ایک دوسرا لاپتہ ہے۔ وہیں دو ایشیائی افراد چٹانیں گرنے سے اس کے ملبے تلے دب لر ہلاک ہو گئے ۔

عمان کے محکمہ موسمیات اور شہری ہوا بازی اداروں نے مشترکہ بیان میں کہا کہ طوفان دارالحکومت مسقط سے 60 کلومیٹر دور ہے اور اس کے باعث 120 کلومیٹر فی گھنٹے یا اس سے زیادہ رفتار سے تیز ہوائیں چل رہی ہیں۔ ایرانی سرکاری ٹیلی و یژ ن کے مطابق امدادی کارکنوں نے اسلامی جمہوریہ پاکستان کی سرحد کے قریب پاس گاؤں پاسبندر سے لاپتہ ہوئے ماہی گیروں میں سے ایک کی لاش برآمد کی۔

اس سے قبل ایرانی پارلیمنٹ کے ڈپٹی اسپیکر علی نک زاد نے اتوار کو کہا تھا کہ کم از کم چھ ماہی گیروں کے طوفان کی وجہ سے مرنے کا خدشہ ہے۔ علاوہ ازیں ایران میں کئی ماہی گیر ابھی تک لاپتہ ہیں۔بحر ہند میں آنے والے سمندری طوفانوں کی پیش گوئی کرنے والے مرکز موسمیات انڈیا ڈیپارٹمنٹ نے کہا ہے کہ شاہین کی وجہ سے اب ہوائیں 90 کلومیٹر فی گھنٹہ (55 میل فی گھنٹہ)کی رفتار سے چل رہی ہیں اور مزید آگے کمزور ہوتی رہیں گی۔