J&K govt draft rules for child Right protection commission

سرینگر:(اے یو ایس)جموں و کشمیر انتظامیہ نے جموں کشمیر میں بچوں کے حقوق کے پینل کے قیام کے مسودہ قوانین کو منظر عام پر لایا۔ مسودے میںکمیشن برائے تحفظ حقوق ایکٹ 2005 مجریہ کے تحت تشکیل دیئے جانے والے قانونی ادارے کے چیئرپرسن اور ارکان کی تقرری کے طریقہ کار کی وضاحت کی گئی ہے۔جموں و کشمیر کمیشن برائے تحفظ حقوق قواعد 2021 کو کمیشن برائے تحفظ حقوق ایکٹ 2005 کے تحت بنایا گیا ہے۔قواعد کے مطابق کمیشن کے چیئرپرسن اور ممبران کا تقرر حکومت کی طرف سے تشکیل دی گئی 3رکنی سلیکشن کمیٹی کی سفارش پر کیا جائے گا جو کہ سماجی بہبود کے وزیرکی صدارت میں ہوگا۔

قوانین میں واضح طور پر کہا گیا ہے کہ کوئی بھی شخص جو انسانی حقوق یا بچوں کے حقوق کی خلاف ورزی کا سابق ریکارڈ رکھتا ہو وہ کمیشن کا چیئرمین یا ممبر مقرر ہونے کا اہل نہیں ہوگا۔قواعد کے مطابق کوئی بھی شخص جو مرکزی حکومت یا مرکز کے زیر انتظام حکومت یا کنٹرول میں رہنے والا ادارہے ،کمیشن یاکارپوریشن کی خدمت سے ہٹا یا گیا یابرخاست کیا گیا ہو وہ چیئرمین یا ممبر کی حیثیت سے تقرری کا اہل نہیں ہوگا۔

قوانین کے مطابق کمیشن بچوں کے حقوق سے متعلق کنونشن کی تعمیل کا جائزہ لینے کے لیے موجودہ قانون ، پالیسی اور عمل کا تجزیہ کرے گا اور بچوں کو متاثر کرنے والی پالیسی اور عمل کے کسی بھی پہلو پر رپورٹ پیش کرے گا جبکہ بچوں سے مجوزہ نئی قانون سازی پر حقوق کے نقطہ نظر پر تبصرہ کرے گا۔ پینل مرکزی زیر انتظام علاقے کی ان پالیسیوں کا مطالعہ کرے گا جو بچوں کو متاثر کرتی ہیں اور اس بات کو یقینی بنائی گی کہ وہ بچوں کے حقوق کے بین الاقوامی معیارات کی تعمیل کریں۔کمیشن قومی اور بین مرکزی زیر انتظام علاقے کے اہمیت کے معاملات اور مسائل کو قومی کمیشن برائے تحفظ حقوق اطفال کو جب چاہے رجوع کرے گا۔