Zam Zam water coolers back into the Haram Sharif after vaccination campaign

ریاض:(اے یو ایس ) سعودی عرب میں کرونا وبا کے باعث مسجد حرام میں زمزم کے کولر رکھنے کا عمل بھی متاثر ہوا تھا مگر اب کورونا ویکسی نیشن مہم کافی حد تک کامیاب ہو چکی ہے اور بڑی تعداد میں لوگوں کو ویکسین لگائی جا چکی ہے۔ اس لیے مسجد حرام میں فراہمی آب انتظامیہ نے زمزم کے کولر مسجد حرام میں واپس رکھنا شروع کر دیے ہیں تاہم ان کولروں سے زمزم حاصل کرتے وقت صحت کے ’ایس اوپیز‘ پر عمل درآمد کرنا ضروری ہے۔

صدارت عامہ برائے امور حرمین شریفین کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ مسجد حرام میں ’سنگ مرمر‘ کے 155 مشربیے اور 20 ہزارچھوٹے زمزم کولر دوبارہ مسجد میں رکھے گئے ہیں۔مسجد حرام میں فیلڈ سروسز امور کے سیکرٹری محمد الجابری نے بتایا کہ مقامی اور غیر ملکی باشندوں کو ویکسین لگوائے جانے کے بعد زمزم کے کولر اور پانی کی ٹینکیاں مسجد حرام میں لائی گئی ہیں۔سعودی پریس ایجنسی ’ایس پی اے‘ کے مطابق ان کولروں سے زمزم لینے کے لیے ایس اوپیز پر سختی کے ساتھ عمل درآمد کرنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ اس وقت مسجد حرام میں سنگ مرمر کے 97 مشربیے دوبارہ نصب کیے جا رہے ہیں۔ ان میں 48 مشربیے گراؤنڈ فلور کے ستونوں کے ساتھ نصب ہیں۔

مبارک زمزم کے لیے کل 145 مشربیے ہیں جب کی مسجد حرام کے صحن میں ان کی تعداد 10 ہے۔انہوں نے بتایا کہ مسجد حرام کی پہلی، دوسری منزلوں اور دوسری توسیع میں تیار ہونے والے مسعی میں نئے واٹر کولر اور زمزم کولر نصب کیے جا رہے ہیں۔ یہ کولر مسجد حرام کے بیڈ روم، اس کے شمالی صحن اور دیگر مقامات پر نصب کیے جا رہے ہیں۔ فائبر گلاس کے کولروں کی جگہ سنگ مرمر کے کولر رکھے گئے ہیں۔الجابری نے بتایا کہ مسجد حرام میں زمزم کو محفوظ کرنے کے لیے استعمال ہونے والے چھوٹے کولروں کی تعداد 20 ہزار ہے ۔ مسجد حرام میں فراہمی آب کے لیے چوبیس گھنٹے 126 ملازمین اور رضا کار سرگرم عمل ہیں۔