At least 46 dead in Uttarakhand, 39 in Kerala due to landslides, flooding

نئی دہلی: اتراکھنڈ اور کیرل میں ریکارڈ بارش اور اس کی وجہ سے سیلاب آنے اور تودے گرنے کے واقعات میں کم از کم85افراد ہلاک ہو گئے۔دونوں ریاستوں میں بارشوں کی وجہ سے کئی علاقوں میں سیلاب کی تباہی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ صرف اترا کھنڈ میں ہی 34 افراد ہلاک ہوچکے ہیں اور بہت سے لوگ ابھی تک لاپتہ ہیں۔محکمہ موسمیات کے مطابق 18 اکتوبر سے 19 اکتوبر کے درمیان کماو¿ن خطے میں تاریخ کی سب سے زیادہ بارش ریکارڈ کی گئی ہے۔ ضلع چمپاواٹ میں زیر تعمیر پل پانی کی سطح میں اضافے کی وجہ سے بہہ گیا جبکہ کئی علاقوں میں سڑکیں اور ریلوے لائنیں خراب ہوگئیں۔ جم کاربیٹ نیشنل پارک کے قریب نینی تال میں سیلاب میں پھنسے ہاتھی کی تصویر منظر عام پر آئی۔ مکتیشور اور نینی تال کے خیرنا علاقے میں مکان گرنے سے سات افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

جھیل سے پانی نکلنے کی وجہ سے نینی تال شہر آس پاس کے علاقوں سے منقطع ہوچکا ہے ، مقامی انتظامیہ کے ساتھ این ڈی آر ایف کی 10 ٹیمیں سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں امداد اور بچاو¿ میں مصروف ہیں۔ فی الحال ، 24 گھنٹے کی شدید بارش کے بعد اب بارش کم ہونے کی پیش گوئی کی گئی ہے۔ اتراکھنڈ میں تباہی کے حوالے سے وزیر اعلیٰ پشکر دھامی کا بیان بھی آیا ہے۔ دھامی نے کہا کہ حکومت ضرورت سے زیادہ بارش سے پیدا ہونے والی تباہی سے نمٹنے کے لیے ہر ممکن کوشش کر رہی ہے۔ لیکن سب سے گزارش ہے کہ صبر کریں۔ ہم سب مل کر ریاست کو اس مشکل صورتحال سے نکال لیں گے۔ وزیراعلیٰ نے لوگوں سے درخواست کی کہ وہ نہ گھبرائیں اور نہ ہی گھبراہٹ، خوف و ہراس پھیلائیں۔

واضح ہو کہ رانی کھیت اور الموڑہ لگاتار دوسرے روزبھی زمینی علاقوں سے منقطع رہا۔کیرل میں منگل کے روز پھر طوفانی بارش ہوئی ۔ گذشتہ چار روز کی بارش میں بارشوں، سیلاب اور چٹانیں گرنے سے کم از کم39افراد ہلاک ہو گئے۔اسی دوران محکمہ موسمیات (آئی ایم ڈی) نے مغربی بنگال کے سلی گوڑی میں وارننگ جاری کی ہے۔ ایک انتباہ دیتے ہوئے محکمہ موسمیات نے لوگوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ 19-20 اکتوبر کو صرف اس صورت میں گھر سے باہر نکلیں جب یہ بالکل ضروری ہو۔ محکمہ موسمیات کے مطابق اگلے دو تین دن تک موسمی حالات ایسے ہی رہیں گے اور اس کے بعد ملک میں سردی کی دستک شروع ہو جائے گی۔ مسلسل بارشوں اور ٹھنڈی ہواو¿ں کی وجہ سے گزشتہ دو دنوں میں درجہ حرارت میں بھی کمی آئی ہے۔ محکمہ موسمیات نے بارش کے حوالے سے الرٹ بھی جاری کیا ہے۔