"Mansouri" Special Unit Created in Balkh Province

مزار شریف(بلخ):صوبہ بلخ میں سیکورٹی عہدیداروں نے کہا ہے کہ امارت اسلامیہ نے”لشکر منصوری“کے نام سے ایک خصوصی فوجی بٹالین تشکیل دینے کا اعلان کیا ہے جو جدید فوجی ساز و سامان سے لیس ہے۔صوبہ بلخ کے سیکورٹی چیف عبدالحئی عابد نے کہا کہ فورسز کو مزار شریف میں سیکورٹی فراہم کرنے کے لیے بنایا گیا ہے۔

عابد نے کہا کہ یہ امارت اسلامیہ کے خصوصی فوجی دستے ہیں انہوں نے مزید کہا کہ یہ سلامتی دستے جدید ترین اسلحہ سے لیس ہیں اور رات دن مزار شریف میں گشت کرتے ہیں اور اغوا کی وارداتیں انجام دینے والے نیٹ ورکس کی شناخت اور ان کے قلع قمع کرنے پر مامور ہیں۔عابد کے مطابق ان افواج نے خصوصی فوجی تربیت حاصل کی ہے اور ان کے زیادہ تر ہتھیار اور آلات امریکی ہیں۔لشکر منصوری کے ارکان کا کہنا ہے کہ ان کا مقصد لوگوں کی حفاظت کو یقینی بنانا ہے۔

لشکر منصوری کے ایک رکن نے کہا کہ مستقبل میں کسی قسم کے مسائل پیدا نہیں ہوں گے اور اگر ہوئے بھی تو عوام امارت اسلامیہ کے سیکورٹی عہدیداروں کو مطلع کریں گے اور ا ن شاءاللہ ہم فوری طور پر جائے وقوعہ پہنچ جائیں گے۔بلخ کے مقامی سیکورٹی عہدیدار وں کے مطابق لشکر منصوری دہشت گرد نیٹ ورک اور مسلح ڈاکوؤں کی پکڑ دھکڑ کریں گے اور بلخ میں سلامتی کے مسائل پیدا نہیں ہونے دیں گے اور نہ ہی کسی گروہ یا فرد کو دہشت گردانہ سرگرمیوں میں ملوث ہونے دیں گے۔

بلخ کے ڈائریکٹر برائے اطلاعات و ثقافت ذبیح اللہ نورانی نے کہا کہ بلخ میں ہماری سکیورٹی فورسز جرائم کے مراکز اور مجرموں کی مدد کرنے والوں کی شناخت اور انہیں گرفتار کرنے کے لیے سخت محنت کر رہی ہیں۔ بلخ پولیس کمانڈ کے اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ سابقہ حکومت کے خاتمے کے بعد سے ایک سو چھہتر افراد کو مسلح ڈکیتی اور اغوا کے الزام میں گرفتار کیا جا چکا ہے۔