Dy Prime Minister of Afghanistan calls on the international community to recognize the current Afghan government

ماسکو: اسلامی امارات افغانستان کے نگراں نائب وزیر اعظم دوئم عبدالسلام حنفی نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ افغانستان کی نئی حکومت کو تسلیم کرے اور امریکہ سے افغانستان کے زرمبادلہ کے ذخائر جاری کرنے کا مطالبہ کیا۔

اپنے خطاب میں حنفی نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ افغانستان کی نئی حکومت کو تسلیم کرے۔ انہوں نے امریکہ سے افغانستان کے زرمبادلہ کے ذخائر جاری کرنے کا بھی مطالبہ کیا۔مسٹر حنفی نے کہا کہ ہمیں فوجی مدد کی ضرورت نہیں ہے ، لیکن ہمیں افغانستان میں تعمیر نو اور امن کی حمایت کرنے کی ضرورت ہے۔

حنفی نے مزید کہا کہ افغانستان کی موجودہ حکومت جامع ہے۔ دوسری جانب روسی وزیر خارجہ سرگئی لاوروف نے افغانستان کی صورتحال کو تشویشناک قرار دیا اور دنیا بھر کے ممالک پر زور دیا کہ وہ نئی افغان حکومت کے ساتھ مشغول ہوں۔لاوروف نے کہا کہ بین الاقوامی برادری کی جانب سے کابل میں نئے عہدیداروں کی عدم شناخت اور معاشی ، سماجی اور انسانی چیلنجز ظاہر کرتے ہیں کہ افغانستان کی صورتحال غیر مستحکم ہے اور داعش اور القاعدہ اس موقع سے فائدہ اٹھا رہے ہیں۔

لاوروف نے افغانستان میں ایک جامع حکومت کی ضرورت پر بھی زور دیتے ہوئے کہا کہ افغانستان میں استحکام کے لیے ایک جامع حکومت کی ضرورت ہے۔لاوروف نے کہا کہ افغانستان میں استحکام کے حصول کے لیے واقعی ایک جامع حکومت کی ضرورت ہے جو معاشرے کے تمام طبقات کے مفادات کی عکاسی کرے۔ اس اجلاس میں افغانستان سے 12 رکنی وفد نے شرکت کی جس کی قیادت عبدالسلام حنفی نے کی۔