Blasts, gunfire heard at military hospital in Kabul, casualties unknown

کابل: اسلامی امارات افغانستان کے عہدیداروں کے مطابق قومی دارالخلافہ کے پولس ڈسٹرکٹ 10 میں آج (منگل) دو دھماکے ہوئے۔امارت اسلامیہ کے نائب ترجمان بلال کریمی نے دھماکوں کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ پہلا دھماکا 400 بستروں والے سردار داو¿د محمد خان اسپتال کے سامنے ہوا اور دوسرا دھماکا بھی اسپتال کے مضافاتی علاقہ میں ہوا۔جائے وقوعہ سے فائرنگ کی آوازیں بھی سنی گئیں۔دریں اثنا وزارت داخلہ کے ترجمان سعید خوستی نے بتایا کہ ایک دھماکا اسپتال کے گیٹ پر ہوا۔

خوستی کے مطابق دھماکوں میں جانی نقصان ہوا ہے تاہم ابھی تک ہلاکتوں کے بارے میں درست تفصیلات دستیاب نہیں ہیں۔خوستی کا کہنا ہے کہ سیکیورٹی فورسز جائے وقوعہ پر پہنچ گئیں۔ جائے وقوعہ پر موجود میڈیا کے نمائندوں کے مطابق ایمبولنسوں کو زخمیوں کو اسپتال لے جاتے ہوئے دیکھا جا رہا ہے۔وسطی کابل میں وزیر اکبر خان علاقہ کے رہائشیوں نے جو تصاویر پوسٹ کی ہیں ان میں علاقہ پر سیاہ دھویں کی ایک چادر تنی دیکھی جا سکتی ہے۔

کسی تنظیم نے فوری طور پر اس دھماکے اور فائرنگ کی ذمہ داری نہیں لی ہے۔لیکن شک کی سوئی داعش کی جانب، جس نے اگست میں طالبان کے بر سر اقتدار آنے کے بعد سے مساجد اور دیگر اہداف کو نشانہ بنا کر کئی حملے کیے ہیں ، جاتی ہے اور اسی نے 2017میں400بستر والے اسپتال پر حملہ کیا تھا جس میں 30سے زائد افراد مارے گئے تھے۔