Pak economy hit by Rs 35 billion loss due to TLP protests

پشاور: تحریک لبیک پاکستان(ٹی ایل پی)کی وجہ سے پاکستان کی معیشت کو بھاری نقصان ہوا ہے۔ یہ اطلاع وزیر اعلیٰ کے معاون خصوصی حسن کھروار نے دی۔ حسن نے اعتراف کیا کہ 2017 سے تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) کی وجہ سے پاکستان کی معیشت کو 35 ارب روپے کا بھاری نقصان ہوا ہے۔ڈان اخبار کے مطابق کھاور نے مزید اعتراف کیا ہے کہ ٹی ایل پی کی جانب سے جاری مظاہروں اور سڑکوں کی ناکہ بندی سے ملک کو 4 ارب روپے کا نقصان پہنچا ہے۔

وہیں2017 کے بعد سے گروپ کے ایجی ٹیشن میں املاک کو پہنچنے والے نقصان اور تجارتی سرگرمیاں معطل کرنے کی وجہ سے پاکستان کو 35 ارب روپے کا نقصان اٹھانا پڑا۔بازاروں میں پھلوں اور سبزیوں کی سپلائی بند کر دی گئی اور ٹرکوں میں موجود کھانے پینے کی اشیا سڑ رہی ہیں۔دریں اثنا ٹی ایل پی کے مظاہرین کی فائرنگ سے چار پولیس اہلکار ہلاک اور 250 کے قریب زخمی ہو گئے ہیں۔جیو نیوز کی رپورٹ کے مطابق ٹی ایل پی کے بڑھتے ہوئے مظاہروں کے درمیان پاکستان کے قومی سلامتی کے مشیر (این ایس اے) معید یوسف نے کہا کہ کالعدم ٹی ایل پی نے ریڈ لائن کراس کر ریاست کا صبر ختم ہو گیا ہے۔

یوسف نے کہا کہ انہوں نے پولیس اہلکاروں کو قتل کیا، سرکاری املاک کی توڑ پھوڑ کی اور بڑے پیمانے پر خلل ڈالنے کا سلسلہ جاری رکھا۔قابل غور ہے کہ ہفتے کے روز لاہور میں ایک کالعدم اسلامی گروپ کے کارکنوں کے ساتھ تصادم میں متعدد افراد زخمی ہو گئے۔ ٹی ایل پی کے ترجمان نے کہا کہ ان کی تنظیم پہلے دن سے فرانسیسی سفیر کی برطرفی سمیت اپنے مطالبات پر قائم ہے۔