Saudi gets first major arms deal under Biden

واشنگٹن:(اے یو ایس)امریکی محکمہ خارجہ نے اعلان کیا ہے امریکا نے سعودی عرب کو فضا سے فضا میں مار کرنے والے جدید میزائل سسٹم کی فروخت کی منظوری دے دی ہے۔ امریکی محکمہ دفاع پینٹاگان نے بھی اس کی تصدیق کر دی کہ محکمہ خارجہ نے سعودی عرب کو 280 اے آئی ایم-120سی فضا سے فضا میں مار کرنے والے میزائل فروخت کرنے کے ایک معاہدے کی منظوری دے دی ہے۔ اس معاہدے کی مالیت 650 ملین ڈالر ہے۔محکمہ خارجہ کے ایک ترجمان نے کہا کہ امریکا نے 26 اکتوبر کو مجوزہ معاہدے کی منظوری دی تھی۔

انہوں نے مزید کہا کہ فضا سے فضا میں مار کرنے والے میزائلوں کی فروخت کا فیصلہ گذشتہ سال کے دوران سعودی عرب پر سرحد پار سے حملوں میں اضافے کے بعد کیا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ سعودی عرب اے آئی ایم-120C میزائلوں سے ڈرون حملوں کو روکنے میں اہم کردار ادا کرسکتا ہے جس سے امریکی افواج کو خطرہ لاحق ہے۔ اس کے علاوہ سعودی عرب میں موجود 70,000 سے زیادہ امریکی شہریوں کو بھی اس نظام سے تحفظ ملے گا۔

ترجمان نے مزید کہا کہ میزائل معاہدہ یمن میں تنازعہ کے خاتمے کے لیے سفارت کاری کو مضبوط بنانے کی خاطر انتظامیہ کے عزم سے پوری طرح مطابقت رکھتا ہے۔ یہ اس بات کو یقینی بنانا ہے کہ سعودی عرب کے پاس ایران کے حمایت یافتہ حوثیوں کے فضائی حملوں کے خلاف اپنے دفاع کے لیے وسائل موجود ہیں۔پیکیج میں 280 درمیانے فاصلے تک مار کرنے والے جدید8C، اے آئی ایم-120سی-7/سی- فضا سے فضا میں مار کرنے والے میزائل اور 596 ایل اےیو-128 لانچرز کے ساتھ ساتھ کنٹینرز، معاون آلات اور اسپیئر پارٹس شامل ہیں۔ امریکا کی جانب سے انجینیر اور ٹیکنیشن کی معاونت بھی معاہدے کا حصہ ہے۔