Taliban Foreign Minister Muttaqi to Visit Pakistan on Nov. 10

کابل: اسلامی امارات افغانستان کے نگراں وزیر خارجہ امیر احمد خان متقی حکومت پاکستان کی دعوت پر 10نومبر کو پاکستان جائیں گے۔ افغانستان میں اقتدار سنبھالنے کے بعد طالبان کے پاکستان کے ساتھ تعلقات تیزی سے بڑھ رہے ہیں اور یہ دورہ پاکستان اسی سلسلہ کی ایک کڑی ہے۔ متقی 11اور 12نومبر کو پاکستان میں ہی قیام پذیر رہیں گے۔

اگست کے وسط میں طالبان کے اقتدار میں آنے کے بعد سے حالیہ مہینوں میں عدم تحفظ کے عالم میں پاکستان نے افغانستان کو خوراک اور ادویات کی صورت میں ضروری انسانی امداد فراہم کی ہے۔ ۔ روسی خبر رساں ایجنسی سپوتنک کے مطابق اکتوبر کے آخر میں طالبان نے پاکستان میں افغان سفارت خانے کا نیا عبوری سربراہ مقرر کیا۔ا س سے پہلے اکتوبر کے اوائل میں، پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے افغانستان کو 280 ملین امریکی ڈالر کی انسانی امداد دینے کا وعدہ کیا تھا تاکہ طالبان کی قیادت والی نئی حکومت کو ملک میں سنگین انسانی بحران پر قابو پانے میں مدد ملے۔

سپوتنک کے مطابق طالبان حکومت کی حمایت کے لیے اسلام آباد کے دیگر اقدامات میں افغانستان کے ساتھ پروازیں دوبارہ شروع کرنا اور دو طرفہ تجارت کو بڑھانا شامل ہے۔متقی کے اس دورے کے دوران جس کی تصدیق افغانستان کی نئی حکومت نے باقاعدہ کر دی ہے، متقی پاکستان حکام سے اقتصادیات، افغان تارکین وطن اور کئی دیگر امور پر تبادلہ خیال کریں گے۔