Sharjah International Book Fair emerges as the largest in world

ابوظہبی:(اے یو ایس ) متحدہ عرب امارات میں 40 واں شارجہ انٹرنیشنل بک فیئر اس وجہ سے اور زیادہ شہرت پا رہا ہے کہ اس میں سترھویں صدی کی ایک ایسی کتاب بھی رکھی گئی ہے جس کی قیمت 45 لاکھ درہم ہے۔ علاوہ ازیں قدیم اور نادر مخطوطات بھی ہیں جن میں سے بعض کا عربی زبان میں ترجمہ کیا گیا ہے۔یاد رہے کہ شارجہ انٹرنیشنل بک فیئر کے اس 40 ویں ایونٹ کو سال 2021 کے لیے نشر و اشاعت کے حقوق کی خرید و فرخت کی سطح پر “دنیا کی سب سے بڑی نمائش” قرار دیا گیا ہے۔میلے میں ہسپانوی مصور پیبلو پکاسو کا تقریبا 80 برس پرانا (1942 کا) ایک شاہ کار فن پارہ بھی موجود ہے۔ اس کو دنیا بھر میں نادر ترین فن پارہ شمار کیا جاتا ہے جو 31 پینٹنگز پر مشتمل ہے اور اس کی قیمت 4.5 لاکھ یورو ہے۔

میلے میں شارجہ پویلین کے ذمے دار یاسر التمیمی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ میلے میں ایک فرانسیسی جاسوس اور مصنف کے ادبی فن پارے کو خصوصی توجہ حاصل ہو رہی ہے۔ سال 1807 سے 1873 کے درمیان میں تحریر کیا گیا یہ سلسلہ 320 کتابوں پر مشتمل ہے۔ یہ مصنف 6 زبانوں میں گفتگو کرنے کی صلاحیت رکھتا تھا۔ دنیا بھر میں اس ادبی فن پارے کا یہ واحد نسخہ ہے اور اس کی قیمت 10.5 لاکھ یورو ہے۔یاسر التمیمی کے مطابق اس کتب میلے میں ایک پبلشنگ ہاو¿س نے ایک نادر مخطوطہ بھی فروخت کے لیے پیش کیا ہے جس کی قیمت 80 لاکھ یورو کے قریب ہے۔التمیمی نے باور کرایا کہ میلے میں بعض ایسے پبلشنگ ہاو¿سز بھی شریک ہیں جن کی آمد کا اصل مقصد لاکھوں درہم قیمت کی کتابیں اور مخطوطات فروخت کرنا نہیں بلکہ ایک ایسی فضا قائم کرنا ہے جو میلے میں آنے والوں کے لیے تعارفی سرگرمیوں کو جنم دے۔