Former UP minister Gayatri Prajapati and two others get life imprisonment in gangrape case

لکھنؤ: چترکوٹ کے اجتماعی آبروریزی معاملے میں ایم پی-ایم ایل اے اسپیشل کورٹ نے اتر پردیش کے ایک سابق وزیر گایتری پرجاپتی کو عمر قید کی سزا سنائی ہے۔ گایتری پرجاپتی کے ساتھ ہی معاملے میں قصور وار آ شیش شکلا اور اشوک تیواری کو بھی عمر قید کی سزا سنائی گئی ہے۔ عمر قید کی سزا کے ساتھ ہی تینوں قصورواروں پر 2-2 لاکھ روپئے کا جرمانہ بھی لگایا گیا ہے۔

اس سے پہلے بدھ کو کورٹ نے گایتری پرجاپتی سمیت ا?شیش اور اشوک کو قصور وار قرار دیا تھا اور سزا کا فیصلہ محفوظ رکھتے ہوئے آئندہ تاریخ جمعہ کو مقرر کی تھی۔تاہم عدالت نے دیگر چار ملزموں وکاس ورما، امریند سنگھ پنٹو، چندرپال اور روپیشور کو ناکافی شہادت کا فئدہ دیتے ہوئے بری کر دیا ۔

پرجا پتی کو 15مارچ 2017کو چتر کوٹ کی رہائشی ایک 35سالہ خاتون کی اس شکایت پر گرفتار کیا گیا تھا کہ پرجاپتی اور اس کے چھ ساتھیوں نے 2014میں جب وہ اس وقت کے وزیر اعلیٰ اکھلیش یادو قیادت والی سماج وادی حکومت میں وزیر نقل و حمل اور کان کنی تھا اس کی کمسن بیٹی سے اجتماعی جنسی زیادتی کی تھی۔