School students to sit for first in-person exams in two years

ریاض:(اے یو ایس ) سعودی عرب میں کرونا وبا کی وجہ سے اسکول کے طلبہ دو سال کے تعلیمی اداروں سے دور رہے مگر اب دو سال بعد آن لائن امتحانات کے بعد طلبا کی اسکولوں میں حاضری کے ساتھ امتحانات کی تیاری کی گئی ہے۔ اس لیے بدھ سے طلبا ہیلتھ پروٹوکول کے تحت امتحانی مراکز میں واپس آئیں گے جب کہ اسکولوں کی امتحانی کمیٹیوں کی طرف سے پہلے سمسٹر کے حتمی امتحانات کے مراکز کے انتظامات اور تیاری مکمل کی گئی ہے۔

سعودی وزارت تعلیم نے خطوں اور گورنریوں میں انتظامیہ میں نمائندگی کرتے ہوئے ٹیسٹوں کی نگرانی کرنے والی کمیٹیاں تشکیل دیں جو کہ پہلے سمسٹر کے امتحانات 1443 ہجری کے اختتام کے کام کو نافذ کرنے اور انہیں مکمل کے لیے پہلے اور دوسرے درجات کے امتحانات کے انٹطامات کی نگرانی کریں گی۔ یہ کمیٹیاں دیگر کلاس کے حاضری کے ساتھ امتحانات کے انعقاد کے ساتھ 20 ربیع الثانی تک امتحانی نتائج کا انتظام کریں گی۔

سعودی عرب میں وزارت تعلیم نے حال ہی میں پرائمری اسکول کے طلبا اور طالبات کے لیے پہلے سمسٹر کے اختتام پرآن لائن امتحانات منعقد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ امتحانات میں بیٹھنے والے12 سال سے زاید عمر کے بچوں کے لیے کرونا ویکسین کی دو خوراکیں لگوانا لازمی قرار دیا گیا ہے۔ جن بچوں نے کرونا ویکسین نہیں لگوائی ان امتحان آن لائن ہوگا۔