China looks to nationalise private schools to promote 'Xi Jinping

بیجنگ: چین نے چھوٹے بچوں کو ذہنی طور پر شی جن پنگ کا عقیدتمند بنانے کی تیاریاں شروع کردی ہیں اور اس کے لیے پرائیویٹ ا سکولوں کو سرکاری ا سکولوں میں تبدیل کرنے کی پالیسی پر زور دیا جا رہا ہے۔ درحقیقت، چین پرائمری اور سیکنڈری سکولوں کے طلبہ کو شی جن پنگ کی تھاٹ سکھانے کے لیے نجی ا سکولوں کا نیشنلائزیشن کرناچاہتا ہے، لیکن اس سے معیاری تعلیم کا نقصان ہوسکتا ہے۔

نکی ایشیا کے مطابق، ابتدائی اور مڈل ا سکول ستمبر کے اسکول کی مدت کے بعد سے صدر شی جن پنگ کے تھاٹ کے سیاسی نظریے کو پڑھانے کی ضرورت پر زور دے رہے ہیں۔ نجی اسکولوں کا سرکاری ا سکولوں میں تبدیل ہونا ظاہر کرتا ہے کہ حکومت وفاداری اور کنٹرول کو مستحکم کرنے کے لیے ا سکول جیسی جگہوں کی طرف دیکھ رہی ہے۔

نکی ایشیا کے مطابق، اس ماہ کے شروع میں، اندرون ملک شانسی صوبے کے تعلیمی حکام نے کہا کہ وہ لازمی تعلیم فراہم کرنے والے نجی ا سکولوں کے آپریٹرز کو اپنے اثاثے مقامی حکومتوں کو منتقل کرنے اور انہیں سرکاری ا سکولوں میں تبدیل کرنے کی ترغیب دیں گے۔

اس سے قبل بھی پارٹی کی مرکزی کمیٹی نے نوجوانوں کی ایک نئی تنظیم چائنیز ینگ پاینرز میں نظریاتی تعلیم کو فروغ دینے کے لیے نئے رہنما اصول جاری کیے تھے۔ اس میں ا سکولوں میں شی جن پنگ کی تعریف کرنے کے احکامات دیے گئے۔ اسی تناظر میں، چین اب نجی ا سکولوں کو قومی بنانا چاہتا ہے اور تعلیم پر سخت کنٹرول رکھنے کے لیے ا سکول کے بعد ٹیوشن اور ٹیسٹ پریپ کمپنیوں کے لیے فیسوں کو کنٹرول کرنا چاہتا ہے۔