Muqtada al-Sadr expresses thanks election commission for holding election successfully

بغداد:(اے یو ایس )عراق میں صدری تحریک کے رہ نما مقتدیٰ الصدر نے پارلیمانی انتخابات کے حتمی نتائج کے سپریم الیکشن کمیشن کے اعلان پر اپنے پہلے ردعمل میں الیکشن کمیشن کا شکریہ ادا کیا ہے۔عراق کے سپریم الیکشن کمیشن نے منگل کے روز گذشتہ ماہ نومبر میں ہونے والے پارلیمانی انتخابات کے حتمی نتائج کا اعلان کیا تھا۔

کمیشن کے سربراہ جلیل عدنان نے ایک پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ آٹھ نومبر کو اعلان کردہ ابتدائی نتائج کے مقابلے میں پانچ گورنریوں میں ایک سیٹ میں کے نتائج تبدیل ہوئی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ووٹر ٹرن آو¿ٹ تقریباً 44 فیصد تک پہنچ گیا تھا۔انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ کمیشن نے خود کو پیشہ ورانہ مہارت کی اعلیٰ ترین سطح پر پابند کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ تمام حتمی نتائج کمیشن کی ویب سائٹ پر شائع کیے گئے ہیں۔عراق میں ہونے والے انتخابات کے نتائج کا جائزہ العربیہ/الحدث کے نامہ نگاروں نے بھی لیا۔ ان کا کہنا تھا کہ بغداد، بصرہ، اربیل، کرکوک اور نینویٰ کی گورنریوں میں صرف 5 پارلیمانی نشستوں کے نتائج متاثر ہوئے ہیں۔نئے نتائج کی روشنی میں، مقتدی الصدر کی قیادت میں ان کی جماعت 73 نشستوں کے ساتھ پہلے نمبر پر رہی۔

اس کے بعد تقدم الائنس نے 37 سیٹوں پر کامیابی حاصل کی ہے۔دولة القانون اتحاد 33 نشستوں کے ساتھ تیسرے نمبر پر، کردستان ڈیموکریٹک پارٹی 31 نشستوں کے ساتھ چوتھے، کردستان الائنس 18 نشستوں کے ساتھ پانچویں نمبر پر ہے۔الفتح الائنس کے پاس صرف 17 نشستیں ہیں۔ اس کے بعد عزم اتحاد کے پاس 14 نشستیں ہیں۔ جبل الجدید کے پاس نو سیٹییں ہیں۔