US spl envoy for Afghanistan meets Taliban delegation in Doha

واشنگٹن:(اے یو ایس)امریکی نمائندہ خصوصی برائے افغانستان تھامس ویسٹ نے کہا ہے کہ قطر کے دارالخلافہ دوحہ میں 29 اور 30 نومبر کو طالبان کے سینئر نمائندوں کے ساتھ کارآمد اور بامعنی تبادلہ خیال ہوا جس میں دہشت گردی، محفوظ راستے، تمام افغانوں کے حقوق اور پائیدار مفادات پر فریقین کے زیر غور رہے ۔

اس ضمن میں جاری بیان میں تھامس ویسٹ نے یہ بھی کہا کہ دوحہ میں طالبان وفد کے ساتھ انسانی بحران پر عالمی برادری کے ردعمل پر بھی تبادلہ خیال ہوا۔انہوں نے کہا کہ طالبان پر زور دیا ہے کہ عام معافی کے اپنے وعدے کی پاسداری یقینی بنائیں اور انتقامی ہلاکتوں، جبری گمشدگیوں کے ذمہ داروں کو پکڑیں۔

ان کا کہنا تھا کہ طالبان انتقامی ہلاکتوں، افغان نیشنل سیکیورٹی فورسز (اے این ایس ایف) کے سابق ارکان کی جبری گمشدگی کی اطلاعات پر امریکی تشویش سے آگاہ ہیں۔امریکی وفد نے افغانستان میں انسانی حقوق کی پامالی پر بھی گہری تشویش کا اظہار کیا۔امریکی نمائندہ خصوصی نے طالبان کو تلقین کی کہ ایک جامع اور نمائندہ حکومت تشکیل دینے کے لئے اضافی اقدامات بھی کریں۔