CDS Gen Bipin Rawat, his wife, 11 others killed in chopper crash in Tamil Nadu's Coonoor

نئی دہلی:چیف آف ڈیفنس اسٹاف جنرل بپن راوت اور ان کی اہلیہ مدھو لیکا راوت کی ہیلی کاپٹر حادثہ میں موت واقع ہو گئی۔ ہندوستانی فضائیہ سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اس ہیلی کاپٹر میں14افراد سوار تھے جن میں سے 13لقمہ اجل بن گئے جبکہ ایک فوجی شدید زخمی ہوگیا ۔ ان کی شناخت کیپٹن ورون سنگھ کے طور پر کی گئی ہے۔ جنرل بپن راوت اور13دیگر کو لے کر پرواز کرنے والا ایک فوجی ہیلی کاپٹر دوپہر12بج کر 20منٹ پر تمل ناڈو میں پرواز بھرنے کے تھوڑی ہی دیر بعد کونور میں گر کر تباہ ہو گیا ۔ اس علاقہ میں یہ ہیلی کاپٹر تباہ ہو کر گرا وہ پورا جنگلی علاقہ ہے۔ روسی ساخت کے اس ایم آئی 17وی 5ہیلی کاپٹر میں بپن راوت سمیت14افراد سوار تھے۔

موصول اطلاع کے مطابق اس ہیلی کاپٹر میں جنرل راوقت کے ہمراہ ان کی اہلیہ مدھولیکا راوت کے علاوہ ا ایک بریگیڈیر رینک کا افسر ، ایک دوسرا اعلیٰ افسر اور دو پائلٹ کے ساتھ ساتھ سیکورٹی کمانڈوز بھی موجود تھے۔حادثہ کی اطلاع ملتے ہی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے وزیر اعظم نریندر مودی سے ملاقات کی اور ان کی ہدایت پر بپن راوت کی رہائش گاہ روانہ جا کر لواحقین سے تعزیت کی۔جنرل راوت آج صبح ہی ویلنگٹن میں ڈیفنس اسٹاف سروسز کالج میں زیر تربیت طلبا سے خطاب کرنے کے لیے دہلی سے کوئمبٹور کے سولور گئے تھے۔ اس وقت ہیلی کاپٹر میں9افراد تھے۔لیکن سولور سے اس میں مزید 5لوگ سوار ہوئے تھے۔ کہ سولور اور کوئمبٹور کے درمیان ہیلی کاپٹر حادثہ کا شکار ہو گیا۔

جائے وقوعہ سے جو ویڈیو شئیر کی گئیں اس میں ہیلی کاپٹر سے شعلے بلند ہوتے دکھائی دے رہے ہیں۔63سالہ جنرل راوت نے جنوری 2019میں ملک کے پہلے چیف آف ڈیفنس اسٹاف کے عہدے کا چارج سنبھالا تھا۔ یو وائی ایس ایم، اے وی ایس ایم، وائی ایس ایم، ایس ایم، وی ایس ایم کے اعزازات سے سرفرا ز جنرل بپن راوت 27 ویں فوجی سربراہ تھے انہوں نے یہ عہدہ 31 دسمبر 2016 جنرل دلبیر سنگھ کی ریٹائرمنٹ کے بعد سنبھالا تھا۔ دسمبر 2019 کے اواخر میں ریٹائرمنٹ سے قبل حکومت نے چیف آف ڈیفنس اسٹاف کے عنوان سے ایک نیا عہدہ قائم کر کے یکم جنوری 2020 کو انہیں اس عہدے کا پہلا سربراہ مقرر کیاتھا۔وزیر داخلہ امیت شاہ نے بھی جنرل راوت کی ہلاکت پر گہرے دکھ کا اظہار کیا ۔