Afghan-Turk school students exhibit robots, various projects

کابل:مزار شریف میں افغان ترک لڑکوں کے ہائی اسکول کے طلبا سائنس، ڈرائنگ اور پینٹنگ میں اپنی مہارت کا مظاہرہ کر رہے ہیں۔اس نمائش میں کیمسٹری، فزکس اور بیالوجی کے شعبوں سمیت سائنس کے پراجیکٹس رکھے گئے تھے۔

افغان ترک بوائز ہائی سکول کے ڈائریکٹر محمد نعیم فروتن کا کہنا ہے کہ دس روز قبل سکول کے طلبا ڈرائنگ اور پینٹنگ کے میدان میں چالیس ممالک میں اعزاز حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے تھے۔ ان کے مطابق یہ مقابلے ترکی میں منعقد ہوئے۔وہ مزید کہتے ہیں کہ 2021 کے اوائل میں عملی طور پر منعقد ہونے والے ایک اور مقابلے میں اس اسکول کے طلبا نے بھی اعزاز حاصل کیا۔وہ مزید کہتے ہیں”یہ ہمارے روبوٹکس ڈیپارٹمنٹ میں فعال ہے۔ اسے اسکول کے تجربہ کار طلبا اور اساتذہ نے فروغ دیا ہے۔

امریکہ میں پہلی پوزیشن حاصل کر چکاہے۔“اس نمائش میں 150 طلبا نے ڈرائنگ، پینٹنگ اور سائنس کے شعبوں میں اپنی کامیابیاں دکھائی جن میں سے زیادہ تر کا تعلق سائنس کے شعبوں سے ہے۔ایک طالب علم احمد ولید نے کہا، “یہ مشین انتہائی آسان الارم کے ساتھ لوگوں کو خبردار کر سکتی ہے ۔ احمد ولید، ایک طالب علم جس نے زلزلہ سے متعلق آلہ بنایا اور اسے نمائش میں دکھایا۔

نمائش کے منتظمین کا کہنا ہے کہ اس نمائش کے آغاز کا مقصد طلبہ کی صلاحیتوں اور ہنر کو اجاگر کرنا ہے۔طلبا کا یہ بھی کہنا ہے کہ اگر انہیں سپورٹ کیا جائے تو وہ زیادہ کردار ادا کریں گے۔طالب علم احسان اللہ نے کہا، “ہم منصوبوں کو جدید اور بنیادی طریقے سے انجام دینے کے لیے پرعزم ہیں۔”باسکٹ بال کھیلنے والا روبوٹ بھی نمائش میں رکھا گیا ہے۔یہ روبوٹ مزار شریف کے افغان ترک بوائز ہائی اسکول کے طلبا نے بنایا ہے جس نے امریکا میں پہلی پوزیشن حاصل کی۔افغان ترک اسکول ملک کے بہترین اور بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ اسکولوں میں سے ہیں۔