France releases Khashoggi murder case suspect, admits identity mistaken

پیرس:(اے یو ایس )فرانس کے دارالحکومت پیرس میں مقتول صحافی جمال خاشقجی کے قتل کیس کے سلسلے میں گرفتار سعودی شہری کو رہا کردیا گیا ہے۔فرانس کے سرکاری استغاثہ نے اس شہری کی رہائی کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ یہ ایک غلط شناخت کا معاملہ تھا اور اس شخص کو غلطی سے حراست میں لیا گیا تھا۔پیرس کے پراسیکیوٹرز نے ایک بیان میں کہا ہے کہ تمام سفری کاغذات کی جانچ پڑتال سے علم ہوا ہے کہ ترکی کی جانب سے غلط طور پروارنٹ جاری کیے گئے تھے اور ان کا اس گرفتارشہری پر اطلاق نہیں ہوتا ہے۔

اس شخص کے سرحد پر چیکنگ کے وقت ا سکین کے دوران پاسپورٹ کو نشان زد کردیا گیا تھامگراس کا اس شخص کی ائیرپورٹ پر گرفتاری پراطلاق نہیں ہوتا تھا۔پیرس میں سعودی عرب کے سفارت خانے نے فرانسیسی حکام سے اس سعودی شہری کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا تھا ۔سفارت خانے نے ایک بیان میں کہا کہ جمال خاشقجی کے معاملے میں مشتبہ سعودی شہری کی گرفتاری کے بارے میں میڈیا میں جو کچھ گردش کر رہا ہے،وہ بالکل غلط اور بے بنیاد ہے۔اس گرفتارشخص کا خاشقجی قتل کے معاملے سے کوئی تعلق نہیں ہے۔