China slams US sanctions on Iran as cooperation agreement launched

بیجنگ: چین اور ایران کے درمیان اقتصادی و سیاسی تعلقات کو مستحکم کرنے کے مقصد سے 25سالہ تعاون معاہدہ کو فعال قرار دینے کے حوالے سے چینی و ایرانی وزراءخارجہ کے اعلان کے بعد چین نے امریکہ کی جانب سے ایران کے خلاف یکطرفہ پابندیوں کی مخالفت کا اعادہ کیا۔

جمعہ کے روز چینی صوبے جیناگسو کے شہر ووکسی میں اپنے ایرانی ہم منصب امیر عبد النہیان کے ساتھ جامع مذاکرات کے بعد، جس میں دونوں ممالک کے درمیان سیاسی، اقتصادی، تجارتی، قونصلر اور ثقافتی مسائل جیسے مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعلقات کو مضبوط بنانے کے راستے تلاش کیے گئے، چین کے وزیر خارجہ وانگ یی نے ایران اور عالمی طاقتوں کے درمیان 2015کے جوہری معاہدے کی بحالی کی کوششوں کی حمایت کی۔

وانگ یی اور امیر اعبد النہیان کے درمیان اس ملاقات کا لب لباب چین کی وزارت خارجہ کی ویب سائٹ پر سنیچع کے روز ڈالی گئی۔وانگ نے، جو اسٹیٹ کونسلر بھی ہیں ، کہا کہ ایران آج جن مشکلات و پریشانیوں سے گذر رہا ہے اس کی بنیادی ذمہ داری ایران و عالمی طاقتوں کے درمیان2015کے جوہری معاہدے سے یکطرفہ طور پر باہر ہوجانے والے امریکہ پر عائد ہوتی ہے۔