Pakistani singer Shae Gill trolled for condoling Sidhu Moose Wala

پشاور: معروف گلوکار اور ریپر شوبھدیپ سدھو موسے والا کے انتقال پر نہ صرف ملک بلکہ بیرون ملک بھی سوگ کی لہر ہے۔ امریکہ، کینیڈا، جنوبی افریقہ کے علاوہ بھارت کے پڑوسی ملک پاکستان میں بھی سدھو موسے والا کے مداح ان کی موت پر غمزدہ ہیں۔ لیکن اس دوران پاکستانی گلوکار شے گل پنجابی گلوکار سدھو موسے والا کی موت پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے سوشل میڈیا پر ٹرول ہو رہی ہیں۔ لیکن ‘پسوری’ فیم شی گل نے بھی ٹرولز کو کرارا جواب دیا ہے۔کوک اسٹوڈیو سیزن 14 کے گانے ‘پسوری’ سے شہرت حاصل کرنے والی شی گل نے ایک انسٹاگرام پوسٹ کے ذریعے سدھو موسے والا کی موت پر افسوس کا اظہار کیا۔

گل نے لکھا، ‘دل ٹوٹ گیا۔ ان کی روح کو سکون ملے اور ان کے اہل خانہ اور دوستوں کو یہ صدمہ برداشت کرنے کی طاقت دے۔ لیکن کچھ لوگوں نے ان کی پوسٹ پر ٹرول کرنا شروع کر دیا کیونکہ اس نے ایک غیر مسلم شخص کے لیے دعا کی تھی۔شی گل نے نفرت کرنے والوں کے کچھ پیغامات اور تبصروں کے اسکرین شاٹس شیئر کرکے اپنی انسٹاگرام کہانی پر لے لیا۔انھوں نے لکھا، ‘مجھے ایسے بہت سے پیغامات مل رہے ہیں۔ میں صرف یہ بتانا چاہتی ہوں کہ میں مسلمان نہیں ہوں۔ میں عیسائی ہوں اور ایک عیسائی خاندان سے تعلق رکھتی ہوں۔ میں مختلف مذاہب کے لوگوں کے لیے دعا کر سکتی ہوں۔ اب اگر کوئی مجھے ایسے پیغامات بھیجے گا تو میں اسے بلاک کر دوں گی۔

شی گل نے کہا کہ یہ غلط ہے کہ لوگ اس کی مورل پولیسنگ کر رہے ہیں۔ سچ پوچھیں تو میں یہ نہیں کہنا چاہتی تھی کہ میں ایک عیسائی ہوں لیکن میں ان لوگوں سے تنگ آ گئی تھی جو سمجھتے ہیں کہ وہ اپنی سوچ کے مطابق میری رہنمائی کر سکتے ہیں۔ سدھو موسے والا کو 29 مئی کو پنجاب میں ان کے گاو¿ں میں گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا تھا۔ کینیڈین گینگسٹر گولڈی برار نے ان کی موت کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔ گلوکار شئی گل کو پاکستان میں شدید ٹرول کیا جا رہا ہے اور لوگ ان پر طرح طرح کے الزامات لگا رہے ہیں۔ گلوکار شی گل کو پاکستان میں شدید ٹرول کیا جا رہا ہے اور لوگ ان پر طرح طرح کے الزامات لگا رہے ہیں۔