Two Islamic Emirate officials banned from travel

نیو یارک: اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی پابندیوں کی کمیٹی نے نائب وزیر اعظم اول عبد الغنی برادر سمیت اسلامی امارات کے متعدد اعلیٰ اہلکاروں پر سفری استثنٰ میں توسیع کر دی۔ جبکہ وسری جانب اعلیٰ تعلیم کے قائم مقام وزیر عبدالباقی حقانی اور نائب وزیر تعلیم سعید احمد شاہد خیل کے سفر پر پابندی عائد کر دی ۔

اقوام متحدہ کے بعض سفارت کاروں نے خبر رساں ایجنسی کو بتایا ہے کہ یہ پابندی افغانستان میں طالبات کی تعلیم پر پابندیوں کے جواب میں یہ پابندی لگائی گئی ہے۔رپورٹ کے مطابق اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے امارت اسلامیہ کے 13 دیگر اہلکاروں کی سفری استثنیٰ میں بھی مزید دو ماہ کی توسیع کر دی ہے۔

جن 13اہلکاروں کے سفری استثنیٰ میں توسیع کی گئی ہے وہ یہ ہیں: عبد الغنی برادر ، عبد الاحمد ترک، شیر محمد عباس استانک زئی پادشاہ خان، ضیاءالرحمٰن مدنی، عبد السلام حنفی علی مدان قل، شہاب الدین دلاور، عبد اللطیف منصور، امیر خان متقی، عبد الحق واثق، خیر اللہ خیرخوان، نور اللہ نوری، فضل محمد مظلوم، عب دالکبیر محمد جان، دین محمد حنیف اور نو محمد ثاقب۔

ان سب کو اس سے قبل90دن کا 22دسمبر تا 21مارچ 2022سفری استثنیٰ حاصل تھا ۔ اسکے تحت وہ لوگ صرف ان اجلاسوں میں ہی شرکت کر نے کے یے بیرون ملک سفر کر سکتے تھے جو امن و استحکام کے قیام کے مقصد سے ہوں۔