USAID chief lauds India’s swift response to help Sri Lanka, slams China for opaque loan deals

نئی دہلی: (اے یوایس ) ہندوستان نے سری لنکا کو معاشی بحران سے نکلنے کے لیے بہت جلد ضروری مدد فراہم کی لیکن سری لنکا کو چین کی مدد کی اپیل کا کوئی جواب نہیں ملا۔ ہندوستان کا دورہ کرنے والی امریکی امدادی تنظیم یو ایس ایڈ کی منتظم سمانتھا پاور نے، جو 25جولائی کو ہندوستان کے 3روزہ دورے پر آئے تھے،دورے کے آخری روزبدھ کو آئی آئی ٹی دہلی میں تقریر کرتے ہوئے کہا کہ چین سری لنکا کو سب سے بڑا قرض دہندہ بن گیا ہے سری لنکا کو بغیر کسی واضح شرائط کے اونچی شرح سود پر قرض دیا گیا۔

پوور نے یہ بھی سوچا کہ کیا چین سری لنکا کے لیے اپنے قرض کی شرائط میں کچھ تبدیلیاں کرے گا۔ امریکہ کی ایجنسی برائے بین الاقوامی ترقی دنیا کی سب سے بڑی امدادی تنظیموں میں سے ایک ہے۔ انہوں نے کہاہندوستان نے ضروری اقدامات کا بہت جلد جواب دیا۔یو ایس ایڈ ایڈمنسٹریٹر سمانتھا نے ہندوستان کی طرف سے 3.5 بلین امریکی ڈالر کی گرانٹ یا سری لنکا کو تقریباً 100 کروڑ روپے بطور قرض اور ملک کے مشکل معاشی بحران سے نکلنے کے دیگر طریقوں سے مدد کا بھی حوالہ دیا۔

انہوں نے کہا کہ یہ چین کے برعکس ایک قدم تھا جس نے 2000 کی دہائی کے وسط سے سری لنکا کی حکومتوں کو قرضوں کے جال میں پھنسا رکھا ہے۔سری لنکا کو ایک غیر معمولی معاشی بحران کا سامنا ہے جس سے لاکھوں افراد خوراک، ادویات، ایندھن اور دیگر ضروری اشیاءخریدنے کے لیے جدوجہد کر رہے ہیں۔ سری لنکا کا کل بیرونی قرضہ 51 ارب امریکی ڈالر ہے۔