Prohibited funding case: ‘Action against PTI according to Constitution & law’

اسلام آباد:(اے یو ایس )وفاقی وزیر ریلوے اور مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ حکومت پاکستان تحریک انصاف(پی ٹی آئی) کے خلاف ممنوعہ فنڈنگ کیس میں قانون و آئین کے مطابق کارروائی کرے گی۔ ۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ ( پی ڈی ایم) کی سطح پر مشاورت ہو رہی ہے اور ایک دو روز میں ممنوعہ فنڈنگ کیس کے حوالے سے قانون و آئین کی روشنی میں فیصلہ کر لیا جا ئے گا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ آخر غیر ملکی کمپنیاں اور شہری عمران خان کے کہنے پر کیوں سرماریہ کاری کرتی تھیں۔

انڈین،ا ماراتی، امریکی، برطانوی شہری کس مقصد کے تحت فنڈ دے رہے تھے؟‘انھوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے جو نوٹس جاری کیا اس کا جواب پی ٹی آئی کو دینا ہو گا، اس کا حکومت سے کوئی تعلق نہیں۔’میرا سوال یہ ہے کہ پی ٹی آئی جواب دے کہ ممنوعہ عطیات و چندوں کا ان کو پتہ تھا۔

ان کو پتہ تھا کہ ان کو کون چندہ دے رہا ہے۔انھوں نے پانچ سال مسلسل جھوٹا سرٹیفیکیٹ جمع کرایا۔ غلطی ایک بار ہو سکتی ہے، پانچ بار نہیں۔‘خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ ’یہ تو محض ایک جھلک ہے باقی تو مزید تحقیقات میں کھل کر سامنے آئے گا کیونکہ برسوں کا آڈٹ نہیں ہوا۔ ان کا آڈٹ ہو گا تو نہ جانے کیا کیاسامنے آئے گا۔ حکومت کو اس بات پر غور کرنا ہو گا کہ پی ٹی آئی کا مکمل آڈٹ کروایا جائے گا۔خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ اگر عمران خان سمجھتے ہیں کہ پنجاب میں حکومت ہے تو لانگ مارچ کریں گے تو کوشش کر لیں۔ ہم اسلام آباد کو اس طرح محفوظ بنائیں گے کہ پہلے کبھی نہیں کیا گیا۔