Six of family found dead in separate houses in Jammu outskirts

سرینگر:(اے یو ایس )جموں کے سدرا علاقے میں ایک ہی خاندان کے چھ افراد اپنی رہائش گاہ پر مردہ پائے گئے۔ رپورٹس کے مطابق پولیس نے، جو اطلاع ملتے ہی موقع پر پہنچ گئی تھی، بتایا کہ بدھ کو یہاں ان کے گھر میں ایک خاندان کے چھ افراد مشتبہ حالات میں مردہ پائے گئے۔ان کی شناخت سکینہ بیگم، ان کی دو بیٹیاں نسیمہ اختر اور روبینہ بانو، بیٹا ظفر سلیم اور دو رشتہ دار نور الحبیب اور سجاد احمد کے طور پر کی گئی ہے۔حکام نے بتایا کہ مرنے والوں میں سے5 کا تعلق مرمت ڈوڈ اسے ہے جبکہ ایک سرینگر کے برزلہ علاقے کا رہائشی ہے۔ان کی اس پر اسرار موت کا معمہ ابھی حل نہیں ہوا ہے اور نہ ہی یہ معلوم ہو سکا ہے کہ یہ لاشیں کتنی دیرسے وہاں پڑی رہیں ۔

پولیس نے بتایا کہ منگل کی رات تقریباً 10 بجے ک برزلہ سرینگرکی ایک خاتون کی طرف سے ایک ٹیلی فونی کال موصول ہوئی کہ اس کا بھائی نور الحبیب اس کی کال نہیں اٹھا رہا ہے اور اسے اندیشہ ہے کہ اس کے ساتھ کچھ ناخوشگوار ہو رہا ہے۔اس اطلاع پر پولیس چوکی سدھرا اور تھانہ نگروٹا کی پولیس پارٹیاں موقع پر پہنچی اور دیکھا کہ گھر کے دروازے اندر سے بند ہیں۔ اسی دوران گھر سے بدبوآتی محسوس ہوئی ، توتوی وہار کالونی سدھرا کے مقامی لوگوں کی موجودگی میں گھر کے دروازے زبردستی کھولے گئے تو وہاں اجتماعی لاشیں پڑی ملیں ۔ اہل علاقہ نے انہیں پہچان لیا اور بتایا کہ چاروں لاشیں نور الحبیب ولد حبیب اللہ، سکینہ بیگم اہلیہ غلام حسن، سجاد احمد ولد فاروق احمد ماگرے اور نسیمہ اختر ولد غلام حسن کی ہیں۔

پولیس نے بتایا کہ مقامی لوگوں نے یہ بھی بتایا کہ قریب ہی ایک اور گھر ہے جو مرنے والوں میں سے ایک کا ہے۔پولیس پارٹی نے وہاں جا کر دروازہ کھولا تو مزید دو لاشیں ملیں جن کی شناخت روبینہ بانو اور اس کے بھائی ظفر سلیم کے طور پر کی گئی۔رشتہ داری کے حوالے سے جاں بحق ہونے والوں میں سکینہ بیگم، ان کی دو بیٹیاں نسیمہ اختر اور روبینہ بانو، بیٹا ظفر سلیم ہیں۔جبکہ دو دیگر نور الحبیب اور سجاد احمد کی رشتہ داری کے بارے میں کچھ معلوم نہیں ہوسکا۔ معاملہ کی تحقیقات کے لیے ایک ایس پی کی سربراہی میں ایک خصوصی تحقیقاتی ٹیم تشکیل دے دی گئی ۔