Attack on Ukraine nuclear plant is like playing with fire

قیف:(اے یو ایس ) جوہری توانائی کے بین الاقوامی ادارے (آئی اےای اے)کے سربراہ نے کہا ہے کہ یوکرین کےزاپورڑیا جوہری پلانٹ پر مسلسل حملے ناقابل قبول ہیں اور انہوں نے تنصیب کے ارد گرد کے علاقے کو غیر فوجی بنانے پر زور دیا۔نہوں نے کہا کہ ہم آگ سے کھیل رہے ہیں اور کوئی بہت المناک واقعہ پیش آسکتا ہے۔رافیل گروسی نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کو ایک ویڈیو بریفنگ کے دوران کہا کہ یہی وجہ ہے کہ ہم اپنی رپورٹ میں پلانٹ اور اس کے ارد گرد کے لیے جوہری سیفٹی اور سیکیورٹی کے تحفظ کا ایک زون تشکیل دینے کی تجویز دے رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آئی اے ای اے ایسے زون کی تشکیل کے لیے ٹھوس اقدامات پر فریقوں سے فوری مشاورت کے آغاز کے لیے تیار ہے۔آئی اے ای اے کے سربراہ نے گزشتہ ہفتے اپنی زیر قیادت پاور اسٹیشن کے مشن کے بعد منگل کے روز ایک رپورٹ جاری کی جس میں انہوں نے اور ان کی ٹیم نے پلانٹ کو پہنچنے والے شدید نقصان کو اجاگر کیا ، لیکن کسی پر الزام عائد نہیں کیا۔آئی اے ای کے معائنہ کاروں نے پلانٹ کے اندر روسی فوجیوں کے ساتھ ان فوجی سازو سامان بھی دیکھا ، جن میں ٹربائنز کے قریب پارک کی گئی فوجی گاڑیاں شامل ہیں۔انہوں نے عملے کی صورتحال بھی تشویشناک پائی ، کیوں کہ وہ مسلسل سخت پریشانی اور دباو کے تحت کا م کر رہے ہیں جس کے نتیجے میں ان کے بقول کوئی انسانی غلطی ہو سکتی ہے۔

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انٹونیو گوئٹریس نے کونسل کو بتایا کہ اس کے نتیجے میں علاقے کے لئے اور اس سے پرے کوئی سانحہ پیش آسکتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ پاور پلانٹ کو نقصان سے بچانے کے لئے تمام اقدامات کیے جانے چاہئیں۔انہوں نے کہا کہ پلانٹ کو وبارہ خالصتاً غیر عسکری ڈھانچہ بنانے کی تمام کوششیں انتہائی اہم ہیں۔سیکرٹری جنرل نے یوکرین اور روس پر زور دیا کہ وہ جوہری پلانٹ کے اندر یا ارد گرد کسی قسم کی فوجی کارروائی نہ کرنے کا عہد کریں اور اسے ایک غیر فوجی علاقہ تشکیل دیں۔انہوں نے کہا کہ خاص طور پر اس میں روسی فورسز کی جانب سے اپنے تمام فوجی عملے اور ساز و سامان کو تنصیب کے علاقے سے نکالنے کا عہد اور یوکرین کی فورسز کی جانب سے اس کے اندر نہ داخل ہونے کا عزم کرنا ہوگا ۔