UNICEF regrets poor response to $39 million appeal for Pakistan's flood-hit children

اسلام آباد: یونیسیف نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا ہے کہ پاکستان کے سیلاب زدہ علاقوں میں 30 لاکھ سے زائد بچوں کے لیے مالی امداد کے طور پر 3 کروڑ 90 لاکھ ڈالر کا مطالبہ کیا گیا تھا ، لیکن اس میں سے ایک تہائی سے بھی کم رقم بطور امداد جاسکی ہے۔ بلوچستان میں اقوام متحدہ کے بچوں کے فنڈ (یونیسیف)پاکستان کی چیف آفیسر گیریڈا بیروکیلا نے کہا کہ پہلے ہی بارشوں اور سیلاب کی وجہ سے 550 سے زائد بچے ہلاک ہو چکے ہیں۔ اگر مدد نہ کی گئی تو ہمیں خدشہ ہے کہ مزید بچے مر سکتے ہیں۔

ڈان اخبار کے مطابق بروکیلا نے منگل کو جنیوا میں کہا کہ دنیا کو ساتھ آکر پاکستان میں بچوں کی مدد کرنی چاہئے۔ ساتھ ہی ہم مل کر پاکستان کے ہر اس بچے کو صحت، تغذیہ اور تعلیم فراہم کر سکتے ہیں جسے اس کی سب سے زیادہ ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ ماہ کے سیلاب نے پاکستان میں 34 لاکھ سے زائد بچوں کو بے گھر کر دیا۔بروکیلا نے کہا کہ یونیسیف پہلے دن سے ہی نچلی سطح پر حکومت کے ساتھ کام کر رہا ہے۔ ہم نے سیلاب کے فوراً بعد ایک ملین ڈالر کی امداد جاری کی اور مزید 3 ملین ڈالر فراہم کیے جا رہے ہیں۔ ہم نے 71 موبائل ہیلتھ کیمپ منعقد کیے ہیں اور بچوں کے لیے عارضی تعلیمی مراکز قائم کیے ہیں۔