Imran Khan demands Shehbaz Sharif's resignation amid audio clips leak row

اسلام آباد: پاکستان کے وزیراعظم شہباز شریف اور ان کی کابینہ کے عہدیداروں کے درمیان غیر رسمی بات چیت کے کچھ آڈیو کلپس سامنے آنے کے بعد سابق وزیراعظم عمران خان نے استعفیٰ کا مطالبہ کیا ہے ۔ عمران نے چیف الیکشن کمشنر (سی ای سی)سکندر سلطان راجہ کو بھی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ وہ وزیر اعظم کے دفتر (پی ایم او)سے آڈیو لیک بدلے میں اگر انہیں کوئی شرم ہوتی تو استعفیٰ دے دیا ہوتا۔ گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عمران نے کہا کہ ‘اب نئی آڈیو کلپس آسامنے آئے ہیں ، جہاں چیف الیکشن کمشنر نواز شریف کے گھر کا نوکر ثابت ہو گئے ہیں’۔

پاکستان کے انٹیلی جنس بیورو نے اس کے نتیجے میں ہونے والی سیکورٹی میں خرابی کی تحقیقات کا حکم دیا ہے۔ پاکستان تحریک انصاف پارٹی کے صدر خان نے کہا، وزیراعظم شہباز شریف کو اپنی، کابینہ کے کچھ ارکان اور سرکاری افسران کی آڈیو لیک ہونے کے بعد استعفیٰ دے دینا چاہیے۔یہاں گورنمنٹ کالج یونیورسٹی میں ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے خان نے کہا کہ آڈیو لیک میں، شہباز اپنی بھانجی مریم نواز کے داماد (راحیل منیر)کے لیے بھارت سے کچھ مشینری منگوانے کی بات کر رہے ہیں۔ اگر شہباز میں کوئی شرم باقی ہے تو وہ فوری استعفیٰ دے دیں ورنہ ہم انہیں گھر بھیج دیں گے۔

خان نے کہا کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کی بیٹی مریم نواز سے جڑا دوسرا آڈیو جلد ہی لیک ہوگا ، جس میں وہ اپنے والد سے یہ کہتے ہوئے سنی جاسکتی ہیں کہ اپنی جائیداد کا اعلان کرنے میں سرکاری خزانے سے ملنے والے تحائف کے بارے میں معلومات نہیں دینے پر توشہ خانہ معاملے میں الیکشن کمیشن عمران خان کو نا اہل قرار دینے جارہا ہے۔