At least 100 children killed in suicide bombing at Kabul school: Report

کابل:(اے یو ایس ) افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ایک خود کش دھماکے میں کم از کم 19 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہو گئے ہیں۔جبکہ سوشل میڈیا پر گردش کر رہی خبروں کے مطابق اس خود کش دھماکے میں کم از کم100 اموات ہوئی ہیں تاہم اس کی کسی آزادنہ ذرائع سے تصدیق نہیں ہو ئی ہے۔ پولیس کے ترجمان خالد زدران کے مطابق یہ دھماکہ جمعہ کے روز صبح کے وقت کابل کے مغربی حصے میں ہوا ہے۔

خود کش بمبار نے ایک تعلیمی مرکز کو ہدف بناتے ہوئے خود کو اس وقت دھماکے سے اڑا لیا جب وہاں ہائی اسکول سے حال ہی میں فارغ ہونے والے طلبا کالج میں داخلے کے لیے کاج ہائر ایجوکیشنل سینٹر میں امتحان کی تیاری کر رہے تھے۔ افغان صحافی بلال سروری نے اس خونریزی کے ہولناک ویڈیو ٹوئیٹ کیے اور ایجوکیشن سینٹر کے ایک رکن کے حوالے سے کہا کہ اب تک ہم اپنے100طلبا کی لش لاشیں شمار کر چکے ہیں۔میں نے ادھر ادھر بکھرے متعدد انسانی اعضا اٹھائے۔

بتایا گیا ہے کہ خود کش دھماکہ جس علاقہ میں ہوا وہاں اقلیتی ہزاراہ برادی /اہل تشیع کی اکثریت ہے ۔ ہزارہ قبائل شیعہ مسلک کی نمائندگی کرتے ہیں اور دشت برچی میں ان کی بڑی آبادی مقیم ہے۔ یہ علاقہ کابل کا مغربی حصہ ہے۔ فوری طور پر کسی گروپ نے اس دھماکے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔